Type to search

بین الاقوامی

چھوٹے کپڑوں کی وجہ سے جہاز سے اتاردیا گیا

امریکہ/جمائیکا/10جولائی(اردوپوسٹ)ایک خاتون کو مبینہ طور پر چھوٹے کپڑوں کی وجہ سے فلائٹ سے اتار دیا گیا۔ اپنے 8 سال کے بیٹے کے ساتھ سفر کررہی سیاہ خاتون امریکن ایئر لائن کے جہاز میں سوار ہوئی تھی۔ جہاز میں پہنچتے ہی عملہ نے خاتون کو بات کرنے کے لیے نیچے اتار لیا۔

امریکہ کے ٹیکساس میں رہنے والی اور پیشہ سے ڈاکٹر ٹشا ریوا نےالزام لگایا ہے کہ انہیں نسل پرستی کی وجہ سے نشانہ بنایا گیا۔ انہوں نے کہا کہ اگر انکی جگہ کوئی وائٹ خاتون ہوتی تو انکے ساتھ ایسا نہیں کیا جاتا۔ واقع کی وجہ سے انکا بیٹا رونے لگا۔ وہ جامیئکا کے کنگسٹن سے فلوریڈا کے میامی جارہے تھے۔

فوٹو- twitter/tisharowemd

میڈیا رپورٹ کے مطابق واقع سامنے آنے کے بعد امریکن ایئرلائن کے ترجمان نے کہا کہ وہ اس معاملے کو سنجیدگی سے لیے رہے ہیں۔ انہوں نے خاتون کے برے تجربے کے لیے افسوس جتایا۔ انکے ٹکٹ کا پوراپیسہ بھی ریفنڈ کردیا گیا۔

خاتون کے ساتھ یہ واقع 30 جون کو ہوا۔ 37 سال کی ٹشا نے ٹیوٹ کرکےلکھا ۔ میں نے یہ کپڑے پہنے تھے(فوٹو) امریکن ایئرلائن نے بات کرنے کے لیے جہاز سے اتارا۔ جب میں نے اپنے ڈریس کو ڈیفنڈ کیا تو دھمکی دی گئی کہ کمبل میں خود کو نہیں لپیٹ تو فلائٹ میں واپس سوار ہونے نہیں دیا جائے گا۔

سوشل میڈیا پر کافی لوگوں نے خاتون کی حمایت کی ہے۔ خاتون نے ایک ٹیوٹ میں لکھا کہ وہ مشورہ دینا چاہتی ہے کہ جنکا بھی بگ بٹ ہو اور شارٹ پہنتی ہو، وہ اس ایئرلائن میں سفر نہ کریں۔