Type to search

صحت

پی سی او ڈی ، پی سی او ایس کیا ہے؟ اقسام ، علامات اور وجوہات

پی سی او ڈی

ہیلتھ ڈسک، (اردو پوسٹ انڈیا ڈاٹ کام) کئی بار کچھ خواتین کو لاکھ کوششوں کے باوجود انکا وزن کم نہیں ہوتا ، بلکہ بڑھتا ہی جاتا ہے۔ اسکے ساتھ ہی کچھ اور علامات کےبعد جب وہ ڈاکٹر کو دیکھاتے ہیں، تو انہیں پتہ چلتا ہےکہ وہ پی سی اور ڈی یا پی سی او ایس سے متاثر ہے ۔

ایسے میں سب سے پہلے یہی سوال اٹھتا ہے کہ آخر یہ پی سی او ایس یا پی سی او ڈی کیا ہے۔ پی سی او ایس یا پی سی او ڈی کے علامات کیا ہے۔ پی سی او ایس کے لیے گھریلو نسخے کیا پی سی او ڈی کے متاثرہ حاملہ کرسکتے ہیں یا نہیں، تو آپکے یہ سارے معلومات یہاں ہیں۔

 کیا ہوتا ہے پی سی او ایس یا پی سی او ڈی

پولی سسٹک اووری سنڈروم یعنی پی سی او ایس خواتین کو ہونے والی عام بیماری ہے۔ اس پولی سسٹک اووری بیماری یعنی پی سی او ڈی بھی کہا جاتا ہے۔

خواتین کو پی سی او ایس تولیدی ہارمونز کا عدم توازن ہونے سے ہوتی ہے۔ اس سے میٹابولزم خراب ہونے لگتا ہے۔ ہارمونز عدم توازن ہونے سے پیریڈس پر اثر ہوتا ہے۔

پی سی او ایس ہونے پر اکثر حامل کی پریشانی ہوتی ہے۔ اسکی وجہ ہے کہ اس بیماری میں انڈا پوری طرح نشوونما نہیں ہوپاتے۔

پی سی او ایس کے قسیمیں
اب سوال یہ اٹھتا ہے کہ پی سی او ایس کتنے قسم کا ہوتا ہے۔

یا اسمیں اسٹیج ہوتے ہیں۔ تو چلیئے جانتے ہیں۔

انسولین مزاحم پی سی او ایس۔ یہ وہ مرحلہ ہے جب جسم میں انسولین متاثر ہوتا ہے ۔ ایسے میں بلڈ شوگر عدم توازن ہونے لگتا ہے اور بیضوی کے عمل ہوتی ہے۔

قوت مدافعت سے جڑا پی سی او ایس ۔ قوت مدافعت کم ہونے پر جسم میں آٹوینٹی باڈیز بننے لگتے ہیں۔ اسکی وجہ سے بھی پی سی او ایس کے مسائل ہوسکتے ہیں۔

ٹائپ 1، ٹائپ 2 اور ٹائپ 3 پی سی اوی ایس بھی ہوتا ہے۔

پی سی او ایس کی وجہ ۔
ہارمونز عدم تواز پی سی او ایس کی اہم وجہ ہوتا ہے۔

لائف اسٹائل پی سی او ایس کا ایک بڑی وجہ ہے۔ بدلتی غذائیت سے بھرپور طرز زندگی کے عناصر کی کمی ،کم جسمانی ورزش، نشے کی لت بھی کافی حد تک اسکی وجہ مانی جاتی ہے۔

خواتین کی اووری کچھ مقدار میں مرد ہارمونز ، جنہیں اینڈروجن کہا جاتا ہے ، کا بھی پیداوار ہوتا ہے۔ جب جسم میں مرد ہارمونز ذیادہ بڑھ جاتے ہیں تو یہ پی سی او ایس کی وجہ بنتا ہے۔

پی سی او ایس کے دوران ہائپرانڈروجنزم کی حالت کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے

اس صورتحال میں بیضوی عمل کے دوران انڈا باہر نہیں نکل پاتے ہیں۔

انسولین کو بھی پی سی او ایس کی ایک وجہ مانا جاتی ہے۔ ہمارے جسم میں موجود شوگر، انسولین ہارمونز کئی ضروری کام کرتے ہیں۔ یہ کھانے کو انرجی میں بدلتے ہیں۔ لیکن انسولین کے عدم توازن ہونے کی صورت میں اینڈروجن ہارمونز بڑھ جاتا ہے۔ جو بیضوی کے عمل کو متاثر کرتا ہے۔ جو پی سی او ایس کی وجہ بن سکتا ہے۔

کیا ہے پی سی او ایس کی علامات 

اس کے کئی علامات ہیں۔ ان میں سے ذیادہ تر علامات بلوغت کے فوری بعد شروع ہوتے ہی اور وہ دیر سے نوعمروں اور ابتدائی جوانی میں بھی ڈیولپ ہوسکتے ہیں۔ ان علامات میں۔۔۔۔۔

وزن بڑھنا
تھکاوٹ
ناپسندیدہ بال
بال پتلے ہونا
بانجھ پن
مہاسے
سر درد
نیند کے مسائل اور موڈ سوئنگ شامل ہے۔