Type to search

صحت

کھانے کے بعد پانی نہانا کیوں نقصاندہ ہے، وجہ جاننا ہے ضروری

کھانے کے بعد پانی نہانا

ہیلتھ ڈسک،(اردو پوسٹ ڈاٹ کام) کھانے کے بعد پانی نہانا – اکثر گھروں میں دیکھا جاتا ہے کہ صبح نہانے کے بعد کھانا کھایا جاتا ہے۔ لیکن بعض اوقات لوگ کھانا کھا کر پانی نہانےجاتے ہیں۔ اس کا اثر کیا صحت پر پڑتاہے یا یہ فائد ے مند ہے یا نقصاندہ ان تمام سوالات کا جواب آئے جانتے ہیں۔ جب بات کھانے کی آتی ہے تو اسکا سیدھا کنکشن آپ کی ہیلتھ سے ہوتا ہے۔ اگر آپکا کھانا۔پان کی عادتیں اچھی ہے تو آپ کی ہیلتھ بھی ٹھیک رہے گی وہیں بری عادتوں سے آپ بیمار پڑ سکتے ہیں۔ ہم یہاں بات کریں گے ایسی عادت کی جس کے بارے میں ہم پتہ نہیں ہوتا اور اسکی قیمت چکانی پڑتی ہے۔

ہماری لائف اسٹائل مصروف ہونے کی وجہ سے ہمارا روٹین بگڑ گیا عام بات ہے، اس میں روزآنہ کی مصروفیات بھی ڈسٹرب ہوجاتی ہے۔ جسے کہ صحیح وقت پر نہانا، اگر آپ صحت مند زندگی جینا چاہتے ہیں تو صرف آپ کی ڈائٹ کا بیلنس ہونا ضروری نہیں بلکہ ہمارے زندگی کی ہر مصروفیت میں بیلینس ہونا ضروری ہے۔
ایوروید کے مطابق، ہر کام کے لیے ایک مقررہ وقت ہوتا ہے او اسکو بدلنے سے جسم کو نقصان ہوسکتا ہے۔ اگر کھاناکھانے کے بعد نہانے کی بات کریں تو کہا جاتا ہے کہ کھانا کھانے کے 2 گھنٹے تک نہانا نہیں چاہیئے۔ کھانا ہاضمے کے لیے جسم کا فائر ایلیمنٹ ذمہ دار ہوتا ہے، جسے ہی آپ کھانا کھاتے ہیں تو فائر ایلمنٹ ایکٹیو ہوجاتا ہے۔ جس سے بلڈ سرکولیشن بڑھ جاتا ہے۔ یہ ہاضمے کے لیے اچھا ہوتا ہے۔ لیکن اگر آپ نہا لیتے ہیں تو جسم کا درجہ حرارت نیچے پہنچ جاتا ہے جس سے ہاضمہ کا عمل آہستہ ہوجاتا ہے۔

ایوروید کی طرح ہی مارڈرن میڈیکل سائنس کہتا ہے کہ نہانے سے جسم کا درجہ حرارت کم ہوجاتا ہے اور بلڈ سرکولیشن ڈائیورٹ ہوتا ہے۔ اسکا نتیجہ یہ ہوتا ہے کہ جو بلڈ ہاضمہ میں مدد کرنے والا ہوتا ہے وہ جلد کی طرف درجہ حرارت مینٹین کرنے کے لیے فالو ہونے لگتا ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ کھانے کے بعد پانی نہانا ،  اکثر الجھن ہونے لگتی ہے اس سے اسی ڈیٹی ، الٹی اور یہاں تک کہ موٹاپا تک ہوسکتا ہے، قدرت کے حساب سے بھی انسان کو کھانے سے پہلے نہانا چاہیئے۔ کیونکہ جب ہم نہاتے ہیں تو جسم کی ہر سیل ری۔اینرجی ہوجاتی ہے۔ اور ہمیں تروتازہ محسوس ہونے لگتا ہے۔ اس سے ہمارے جسم کو بھوک ہونے کے سگنلس ملنے لگتے ہیں۔ وہ مشورہ دیتے ہیں کہ کھانا کھانے کے 40-35 منٹ بعد ہی نہانا چاہیئے۔

Tags:

You Might also Like