Type to search

ٹی وی اور فلم

بالی ووڈ اداکار رتن چوپڑا نہیں رہے، غریبی میں گذارے آخری دن

فلمی ڈسک،14جون(اردو پوسٹ انڈیا ڈاٹ کام) بالی ووڈ کے اداکار رتن چوپڑا کا انتقال ہوگیا ہے۔ وہ کینسر سے متاثر تھے۔ انکا انتقال پنجاب کے ملیرکوٹلہ میں جمعہ کو ہوا۔ رتن چوپڑا کی بیٹی انیتا نے انکی موت کی خبر کی تصدیق کی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ رتن کینسر کی بیماری سے متاثر تھے انکے پاس علاج کے لیے پیسے نہیں تھے۔

رتن نے خاندان سے جڑے ذرائع کی مانیں تو 10 دن پہلے بالی ووڈ ایکٹر دھرمندر، اکشے کمار اور سونو سود سے مدد کی درخواست کی تھی۔ حالانکہ انہیں کسی کی مدد نہیں ملی۔ وہ اپنے آخری دنوں میں پیسوں کی کمی کا شکار رہے تھے۔ وہ اپنے ایریا کے لوکل گرودوارے اور مندروں سے ملنے والے کھانے پر گذارا کررہے تھے۔ رتن پچھلے کچھ وقت ہریانہ کے پنچکولہ کے سیکٹر 26 میں کرایے کے مکان میں بسے تھے۔

بتایا جارہا ہے کہ رتن چوپڑا کو اسی سال جنوری کے مہینے میں اپنے کینسر سے متاثر ہونے کے بارے میں پتہ چلا تھا۔ وہ غیر شدہ تھے اور اسکول اور کچھ دیگر انسٹی ٹیوٹ میں انگریزی پڑھاتے تھے۔ رتن نے اپنی خود کی پڑھائی پٹیالہ کے چندی گڑھ اینڈ پنجاب یونیورسٹی سے کی تھی۔ انکا اصلی نام عبدالجبار خان تھا۔ انہوں نے انیتا نام کی ایک لڑکی کو گود لیا تھا۔

رتن چوپڑا نے سال 1972 میں آئی فلم موم کی گڑیا میں اہم کردار نبھایا تھا۔ اس میں انکے ساتھ ادکارہ تنوجا بھی تھی۔ رتن نے اپنے وقت میں یہ دعوی کیا تھا کہ انہیں لوفر، آیا ساون جھوم کے اور گنجن جیسی فلموں کے آفر ملے تھے۔ ان سبھی کو انہوں نے اپنی دادی کے زور ڈالنے پر ٹھکرا دیا تھا۔ رتن کی دادای انکے فلمی کیریئر کے خلاف تھی۔ اس لیے ان پر بالی ووڈ کو چھوڑنے کا دباؤ بنایا گیا تھا اور بعد میں انہوں نے انڈسٹری کو الوداع کہے دیا تھا۔