Type to search

قومی

یکم فروری 2020 کو پیش ہوگا عام بجٹ

نئی دہلی،9جنوری(اردو پوسٹ انڈیا ڈاٹ کام) مرکزی کی مودی حکومت کے دوسرے معیاد کا دوسرا عام بجٹ یکم فروری 2020 کو پیش ہوگا۔ پارلیمانی امور کے وزیر پرہلاد جوشی نے چہارشنبہ کو اس با کا اعلان کردیا ہے۔ اس بجٹ سیشن کی تیاری زوروں سے شروع ہوچکی ہے۔

اس بجٹ سے سبھی کو کافی امیدیں ہیں، لیکن، حکومت کے سامنے سب سے بڑا چیلنج ملک کی اکنامی گروتھ کو پٹری پر لانا ہے۔آپ کو بتادیں کہ پی ایم مودی کے دوسرے معیاد کا پہلا بجٹ پیش کرنے سے پہلے وزیر خزانہ نرملا سیتا رمن آج بجٹ کی کاپی لیکر نکلیں تو انکے ہاتھ میں لال سوٹ کیس کی جگہ لال رنگ کے کپڑے میں بجٹ کی کاپی لیپٹی نظر آئی۔

جب پہلے بجٹ میں توڑی 159 سال پرانی روایت۔ وزیر خزانہ کے ہاتھ میں لال رنگ کا اشوک نشان والا ایک کپڑا تھا۔ ہمیشہ بجٹ کی کاپی سوٹ کیس میں لے جانے کی روایت رہی ہے۔ لیکن نرملا سیتا رمن نے اس روایت کو توڑتے ہوئے بجٹ کی کاپی لال رنگ کے کپڑے میں رکھی۔

ایسا پہلی بار ہوا جب بریف کیس کی جگہ بجٹ دستاویز کو ایک لال رنگ کے کپڑے میں پارلیمنٹ لایا گیا ہو۔ اسکے ساتھ ہی اسے بجٹ نہیں بلکہ بہی کھاتہ کہا جارہا ہے۔ ایسے میں کہا جاسکتا ہے کہ مودی حکومت اس بار پارلیمنٹ میں بجٹ نہیں بلکہ بہی کھاتہ پیش کرئے گی۔

مودی حکومت کے پہلے معیاد میں ارون جیٹلی نے 92 سال پرانی روایت کو ختم کردیاا تھا۔ سال 2017 سے ریلوئے بجٹ کے اعلانات بھی وزیر خزانہ عام بجٹ میں ہی کرنے لگے، اس سے پہلے وزیرریلوئے عام بجٹ سے ایک دن پہلے ریلوئے بجٹ پارلیمنٹ میں پیش کرتے تھے۔ عام بجٹ میں ریلوئے بجٹ کو ضم کرنے کے ساتھ ہی  جیٹلی نے بجٹ پیش کرنے کی تاریخ بھی بدل دی۔ بجٹ اب قریب ایک مہینہ پہلے یکم فروری کو پیش ہونے لگا ہے۔ ساتھ ہی اکنامک سروے بھی 31 جنوری کو آنے کی شروعات ہوگئی۔

Tags: