Type to search

تلنگانہ

آدھار: یو آئی ڈی اے آئی نے حیدرآباد میں 127 افراد کو نوٹس جاری کیا، کہا اسکا شہریت سے کوئی تعلق نہیں

حیدرآباد،19فروری(بھاشا، اردو پوسٹ انڈیا ڈاٹ کام) یو آئی ڈی اے آئی نے منگل کو کہا کہ اس کےحیدرآباد دفتر نے مبینہ طور پر غلط طریقہ سے اپنا آدھار نمبر حاصل کرنے کے لیے 127 لوگوں کو نوٹس بھیجا ہے۔ حالانکہ یہ جوڑا کہ اسکا شہریت سے کوئی تعلق نہیں ہے۔۔ یونیک آئیڈینٹی فیکیشن اتھارٹی آف انڈیا (یو آئی ڈی اے آئی) نے پولیس سے رپورٹ ملنے کے بعد نوٹس جاری کیے۔

جن لوگوں کو نوٹسز جاری کیے گئے ہیں ان میں سے بیشتر کا تعلق مسلم برادری سے ہے۔ پہلے یہ اطلاع ملی تھی کہ یو آئی ڈی اے آئی نے مسلم کمیونٹی کے تین افراد کو نوٹس جاری کیا ہے ، تاہم اب یو آئی ڈی اے آئی نے واضح کیا ہے کہ کل 127 افراد کو نوٹس جاری کیا گیا ہے۔

بیان میں کہا گیا کہ آدھار شہریت کا دستاویز نہیں ہے اور آدھار ایکٹ کے تحت یو آئی ڈی اے آئی کو یہ یقینی کرنا ہوتا ہے کہ آدھار کے لیے درخواست کرنے سے پہلے کوئی شخص ہندوستان میں کم سے کم 182 دنوں سے مقیم ہو۔ سپریم کورٹ نے اپنےایک تاریخی فیصلے میں یو آئی ڈی اے آئی کو غیر قانونی تارکین وطن کو آدھار نہیں جاری کرنے کی ہدایت دی تھی۔

نوٹس میں یہ دعوی کیا گیا ہے کہ حیدرآباد ریجنل آفس ایک طویل عرصے سے اس معاملے کی تحقیقات کر رہا ہے۔ اس سلسلے میں ، تمام 127 افراد سے 20 فروری کو انکوائری آفیسر امیتا  کے دفتر میں پیش ہوکر اپنی شہریت ثابت کرنے کے لئے تمام اصل دستاویزات دیکھانے کو کہا گیا ہے۔ اگر وہ اپنی شہریت ثابت کرنے میں ناکام ہوئے تو ایسی صورتحال میں ان کا آدھار نمبر غیر فعال کردیا جائے گا۔ تاہم ، نوٹس میں یہ نہیں بتایا گیا ہے کہ ان لوگوں کو اپنی شہریت ثابت کرنے کے لیے کون سے دستاویزات دکھانے ہونگے۔

Tags:

You Might also Like