Type to search

تلنگانہ

لاک ڈاؤن کی وجہ سے تلنگانہ بارڈر سیل ، گاڑیوں کا آنا جانا ٹھپ

حیدرآباد،23 مارچ(اردو پوسٹ انڈیا ڈاٹ کام) کورونا وائرس (کوویڈ ۔19) وبا سے نمٹنے کے لیے تلنگانہ حکومت نے لاک ڈاؤن کردیا ہے۔ اسکی وجہ سے تلنگانہ سے جڑنے والے دیگر ریاستوں کے بارڈر سیل کر دیئے گئے ہیں۔ بارڈر سیل کردینے کی وجہ سے گاڑیوں کا آنا جانا ٹھپ ہوگیا ہے۔

ملی معلومات کے مطابق پیر کو صبح تلنگانہ کے کئی بارڈر کو سیل کردیئے گئے ہیں۔ پولیس نے سوریہ پیٹ ضلع کے کودڈا منڈل علاقے کے رام پور کراس روڈ چیک پوسٹ کے پاس حفاظتی انتظامات سخت کردئیے گئے ہیں۔ ساتھ ہی گاڑیوں کو چیک پوسٹ کے پاس روک دیا ہے۔

دیگر ریاست سے آنے والے لاری، ڈی سی ایم ، کار جیسے گاڑیوں کو تلنگانہ میں داخلہ نہیں دیا جارہا ہے۔ ان گاڑیوں کو چیک پوسٹ کے پاس بنے وینچروں میں پارکینگ کردیا ہے۔

اہلکاروں نے احکام دیئے ہیں کہ 31 مارچ تک تلنگانہ میں لاک ڈاؤن ہونے کی وجہ سے کسی بھی گاڑی کو داخلہ نہیں دیا جائے گا۔ اسی سلسلہ میں گاڑی ڈرائیور اور کلینروں کے لیے کھانے کے انتظامات کیے گئے ہیں۔

دوسری طرف وزیراعلی کے چندر شیکھر راؤ نے جنتا کرفیو ایک دن کی کامیابی کے بعد اسے 31 مارچ تک بڑھا دیا گیا ہے۔ اس حوالے میں سی ایم نے 1897 کے وبائی امراض ایکٹ کے تحت حکم جاری کیا ۔ اس دوران اہم اشیاء کی خریداری کی اجازت ہوگی۔ خاندان کا ایک شخص اس دوران گھر سے باہر نکل سکے گا۔ اور چیزیں خرید کر گھر واپس لوٹے گا۔

بتادیں کہ کے سی آر نے پریس کانفرنس نے اتوار کی صبح 6 بجے سے دوسرے دن پیر کی صبح 6 بجے تک 24 گھنٹے کا جنتا کرفیو کیا تھا، پھر پیر کی شام میں کے سی آر نے دوبارہ پریس کانفرنس بتایا کہ جنتا کرفیو کو 31 مارچ تک کردیا گیا ہے۔ کے سی آر نے عوام سے اپنے گھروں میں رہنے کو ترجیح دینے کے لیے کہا۔

 

Tags:

You Might also Like