Type to search

تلنگانہ

سی ایم کے سی آر کا اعلان ،31مارچ تک جاری رہے گا جنتا کرفیو

حیدرآباد،22مارچ(اردو پوسٹ انڈیا ڈاٹ کام) تلنگانہ وزیراعلی کے چندر شیکھر راؤ نے جنتا کرفیو ایک دن کی کامیابی کے بعد اسے 31مارچ تک بڑھا دیا ہے۔ اس تناظر میں سی ایم نے 1897 کے وبائی امراض ایکٹ کے تحت حکم جاری کیا۔ اس دوران اشیائے ضروریات کی خریدی کی اجازت ہوگی۔ خاندان کا ایک رکن اس دوران گھر سے باہر نکل سکے گا اور چیزیں خرید کر واپس لوٹے گا۔


وزیراعلی نے کہا کہ حیدرآباد میں کورونا وائرس سے متاثرہ پانچ معاملے مثبت پائے گئے ہیں۔ متاثرہ لوگوں میں 25 لوگ بیرون ملک سے آئے ہوئے ہیں۔ انہیں طبی خدمات دستیاب کرائی جارہی ہے۔ انکی حالت میں سدھار ہونے کے بعد انہیں گھر واپس بھیج دیا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ صرف بیرون ملک امریکہ اور دبئی سے آئے ہوئے ہیں۔ انہیں ہوم کورنٹائن میں رکھا گیا ہے۔

سی ایم نے کہا کہ صرف ایک شخص تلنگانہ سے مثبت پایا گیا۔ جبکہ اسکی بیوی بیرون ملک سے آئی تھی۔ اور اس میں کورونا وائرس کے علامات پائے گئے۔ اس سے اسکے شوہر پر بھی وائرس کا اثر ہوا۔ کے سی آر نے کہا کہ بیرون ملک سے آنے والے لوگوں پر روک لگا دی گئی ہے۔ اب ریاست میں سبھی لوگوں کو سبھی کے لیے احتیاط برتنی ہے۔ 31 مارچ تک نظم وضبط بنائے رکھتے ہوئے جنتا کرفیو کو کامیاب بنانے کا لوگوں کو سی ایم نے گذارش کی ہے۔

کے سی آر نےنجی اداروں میں کام کرنے والے ملازمین کے 31تاریخ تک جنتا کرفیو کے تحت غیر حاضر ہونے پر ان دنوں کی تنخواہ دینے کا حکم دیا۔ انہوں نے کہا کہ انگن واڑی مراکز کو بند کردیا جائے گا۔ حاملہ خواتین کی فہرست بنائی جارہی ہے۔ انکے ڈیلیوری کے لیے کسی قسم کی پریشانی نہ ہو، اسکے لیے قدم اٹھائیں جائیں گے۔

کے سی آر نے کہا کہ 31 مارچ تک آر ٹی سی بسیں ، آٹوز ، ٹیکسیاں بند کیے جارہے ہیں۔ پانچ سے ذیادہ سڑک پر جمع ہونے یا گھومنے کی صلاح دی ۔

Tags:

You Might also Like