Type to search

تلنگانہ

سیرۃ النبی اکیڈمی کے زیراہتمام شرعیہ کونسلنگ سنٹر کا افتتاح

شادی بیاہ، خلع طلاق جیسے جھگڑوں کو قرآن و سنت کے تحت حل کرنے شرعیہ کونسلنگ سنٹر کا قیام


حیدرآباد،27نومبر(پریس نوٹ) معاشرہ میں برائیوں کو روکنےاور عائلی تنازعات و جھگڑوں کے خاتمہ کے لیے سیرۃ النبی اکیڈمی کے زیر اہتمام قاضی پورہ میں شرعیہ کونسلنگ سنٹر کا قیام عمل میں لایا گیا۔ افتتاح تقریب میں علما و مشائخ و معززین کی کثیر تعداد نے شریکت کی۔ مولانا ڈاکٹر سید محمود صفی اللہ حسینی قادری وقار پاشاہ کونسلنگ سنٹر کے اقدام کو مستحسن قرار دیا اور کہا کہ قرآن پاک کے مطابق مسلمان آپس میں بھائی بھائی ہے اور انکے درمیان صلح صفائی علما کے ذمہ داری ہے۔

مولانا ڈاکٹر محمد سیف اللہ نائب شیخ الجامہ جامعہ نظامیہ نے سماجی برائیوں کے خاتمہ کے لیے تعلیم کے ساتھ تربیت پر زور دیا اور مشائخ حضرات کے ذریعہ اس طرح کی مہم کے آغاز کو خوش آئند قرار دیا۔ مولانا سید اولیاء حسینی مرتضی پاشاہ قادری ، مولانا محمد فصیح الدین نظامی مہتمم کتب خانہ جامعہ نظامیہ اور دوسروں نے افتتاحی تقریب سے خطاب کیا۔

 مولانا سید غلام صمدانی علی قادری صدرنیشن سیرۃ النبی اکیڈمی نے بتایا کہ معاشرہ میں شادی بیاہ، خلع طلاق اور دیگر تنازعات اور جھگڑوں کو قرآن و سنت کے تحت حل کرنے کے لیے شرعیہ کونسلنگ سنٹر کا قیام کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ عدالتوں میں مسلمانوں بالخصوص مسلم خواتین کی تعداد میں اضافہ کے پیش نظر اس طرح کی مہم کو شروع کیا گیا ہے۔

 سیرۃ النبی اکیڈمی کی جانب سے سپریم کورٹ میں تین طلاق کے مقدمہ میں گذشہ مرتبہ بھی پیروی کی گئی تھی۔ اس مرتبہ بھی اکیڈمی فریق کے طور پر شامل ہے۔ مولانا سید محمد صدیق حسینی عارف کی دعا پر اجلاس کا اختتام عمل میں آیا۔

 اجلاس میں مولانا سید حسن ابراہیم حسینی قادری سجاد پاشاہ، مولانا سید خضر پاشاہ قادری، مولانا سید عبدالقادر قادری وحید پاشاہ، مولانا سید عبدالرؤف حسینی بغدادی ، مولانا سید لیاقت حسین رضوی مختار پاشاہ، مولانا سید قبول اللہ حسینی، مولانا صوفی ہارون چشتی ابوالعلائی، مولانا صوفی تاج عل چشتی ابوالعلائی، جناب محمد اظہر الدین جماعت اسلامی کے علاوہ قانون داں افراد اور مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والی شخصیتیں شریک تھیں۔ مولانا سید غلام قادر قطب حسینی جنرل سکریٹری سیرۃ النبی اکیڈمی نے کاروائی چلائی اور شکریہ ادا کیا۔ سید غلام محمد واثق قادری ابراہیم پاشاہ نے انتظامات کی نگرانی کی۔

Tags: