Type to search

جرائم و حادثات

شادی شدہ ٹیچر نے اسکول میں طالب علم سے بنائے تعلقات، کہا- دی تھی رضا مندی

امریکہ،14ستمبر(ایجنسی،اردوپوسٹ ڈاٹ کام) ایک 37 سال کی شادی شدہ خاتون ٹیچر پر الزام ہے کہ انہوں نے 17 سال کے طالب علم کے ساتھ اٹھ بار اسکول کے میدان میں تعلقات بنائے- اب ٹیچر نے خود کے بچاؤ میں کہا کہ طالب علم نے رضامندی دی تھی- یہ معاملہ امریکہ کے کنچوکی ریاست کا ہے- یہاں 17 سال کا شخص قانونی طور سے سیکس کے لیے رضامندی دے سکتا ہے-

ڈیلی میل کی رپورٹ کے مطابق پولیس نے اولڈہم کاؤنٹی ہائی اسکول ٹیچر پر الزام لگایا تھا کہ انہوں نے اسکول کی چھٹی ہوجانے کے بعد طالب علم کے ساتھ تعلقات بنائے- پولیس نے ان پر ریپ کا دفعات میں کیس کیا- جون 2018 میں ہی ٹیچر کو گرفتار بھی کیا گیا تھا-

نومبر 2019 میں اس معاملے میں عدالت میں ٹرائل شروع ہوگا- لیکن اس سے پہلے ہی ٹیچر نے خود کے بچاؤ میں کہا کہ طالب علم کے ساتھ رضامندی سے انکے تعلقات بنے تھے- پولیس نے نابالغ کے ساتھ ریپ کرنے سے متلق دفعات میں مقدمہ درج کیا تھا-

کورٹ میں جمع کیے گئے دستاویزات کے مطابق انکی طرف سے دلیل دی گئی ہے کہ طالب علم کی عمر اتنی تھی کہ وہ قانونی طور سے رشتے کے لیے رضامندی دے سکے، اسکی وجہ سے جب خاتون ٹیچر کی گرفتار کی گئی تو انکے آئینی حکام کا ہن ہوا- پولیس کی جانچ تب شروع کی تھی جب اولڈہم کاؤنٹی ہائی اسکول کے ڈائریکٹر کی ٹیچر-طالب علم کے جنسی تعلقات کے بارے میں کسی نہ معلومات بھیجی تھی- پولیس نے اس معاملے کو لیکر کہا تھا کہ ٹیچر پوزیشن آف اتھاریٹی میں تھی اور انہوں نے 18 سال سے کم عمر کے شخص سے تعلقات بنائے-