Type to search

بین الاقوامی

امریکہ میں ہند نژاد سمیعہ نسیم  بنی جج 

لندن،11جنوری(اردو پوسٹ انڈیا ڈاٹ کام) گوگل اور مائیکرو سافٹ جیسی بڑی کمپنیوں میں ہند نژاد کے لوگ اپنا نام روشن کررہے ہیں ، حال ہی میں سینیٹر کے عہدوں میں بھی ہند نژاد کے اثر کےبعد ایک اور اچھی خبر سامنے آئی ہے۔ امریکہ میں رہنے والی ہند نژاد کی سمیعہ نسیم کو شکاگو کے جج کے طور پر منتخب کیا گیا ہے۔ جلد ہی اس عہدے کو سنبھالیں گی۔ امریکہ کے اٹارنی جنرل ولیم بار نے نسیم کو شکاگو کے جج کے عہدے کے لیے مقرر کیا تھا۔ حال ہی میں نسیم نے شکاگو کے محکمہ انصاف کے مرکزی عمارت میں ایک اہم تقریب میں جج کا حلف لیا۔ اس سے پہلے نسیم کئی اہم عہدوں پر اپنی خدمات دے چکی ہے۔

سمعیہ نسیم کے خاندان نے بتایا کہ وہ بچپن سے ہی پڑھائی میں کافی اچھی تھی۔ انکے ابو نسیم خالد جہاں پیشے سے وکیل ہیں وہیں والدہ ہمیرہ نسیم انجینئر ہے۔ خاندان امریکہ جانے سے پہلے گورکھپور کے پریس روڈ میں رہا کرتے تھے۔ حالانکہ سال 1978 میں وہ اپنی گریجویٹ کی پڑھائی کے لیے امریکہ چلے گئے اور وہیں بس گئے۔ سمعیہ نسیم کی پیدائش بھی ہوئی ہے۔

بتادیں کہ سمعیہ نسیم نے سال 2001 میں واشنگٹن کے سیمنس کالج سے آرٹ میں گریجویشن کیا۔ یوکے کے آکسفورڈ سے سال 2002 میں انٹرنیشنل ہیومن رائٹ لاء ریفیوجی لاء کی پڑھائی کے بعد 2004 میں جیوریس ڈاکٹر کی پڑھائی واشنگٹن یونیورسٹی لاء اسکول سے پوری کی۔ اسکے ساتھ نسیم نے نیویارک اور شکاگو میں اہم وکیل، امیگریشن اور کسڈم چینجز محکمہ ،  ہوم لینڈ سیکیورٹی کے محکمہ کے معاون چیف وکیل کے طور پر کام کیا۔ نسیم نیویارک کے اسٹیٹ بار کی ممبر بھی ہیں۔