Type to search

صحت

چاول کے پانی کے فائدے : کئی بیماریوں سے رکھتا ہے دور

چاول کے پانی کے فائدے :

ہیلتھ ڈسک، (اردو پوسٹ انڈیا ڈاٹ کام) کیا آپ بھی پھینک دیتے ہیں چاول کا پانی؟ آئیے جانتے ہیں کیوں نہ پھینکے کا پانی ۔ اور کیا اس کے فائدے۔


:چاول کے پانی کے فائدےَ

کیا آپ کے گھر میں بھی چاول کا پانی یوں ہی پھینک دیا جاتا ہے؟ اگر ہاں! تو شاید آپ کو پتہ نہیں ہے کہ چاول کا پانی صحت کے لیے کتنا فائدے مند ہوتا ہے۔ یہ پانی روزآنہ پینے سے کئی بیماریوں کو دور کیا جاسکتا ہے۔ اسکے ساتھ ہی یہ جسم کو طاقت دینے کا بھی کا م کرتا ہے۔

زیادہ تر لوگ چاول کو پانی میں ابال کر، نتھار کر اور چاول کے پانی کو پھینک کر پکاتے ہیں۔ اگر آپ بھی اسی طرح چاول بناتے ہیں، تو آپ کو ابھی بچے ہوئے پانی کو پھینکا بند کرنے کی ضرورت ہے۔

بچے ہوئے پانی جیسے چاول کے پانی کے طور پر بھی جانا جاتا ہے۔ غذائیت سے بھر پور ہوتا ہے اور یہ آپ کو کئی طرح سے فائدہ پہچا سکتا ہے۔ چاول کے پانی کے فائدے کئی ہیں۔

یہ آپ کی جلد کے علاج کے طور پر بھی مقبولیت حاصل کررہا ہے۔ یہ آپ کی جلد کو سکون بخشنے اور ٹون کرنے لیے جانا جاتا ہے۔ اسکے ساتھ ہی چاول کا پانی جلد کے کئی مسائل میں سدھار کرتا ہے۔

چہرے پر قدرتی چمک کے لیے

چاول جسے عام طور پر کھانے کے لیے استعمال کیا جاتا ہے۔ اسکے جلد سے جڑے بھی کئی فائدے ہوتے ہیں۔

چاول آپکی خوبصورتی کو بڑھا سکتا ہے۔ اسکے لیے آپ کو بس چاول کا پانی تیار کرنے کی ضرورت پڑے گی۔

اسکین کے لیے چاول کے پانی کے بہت سارے فائدے ہوتے ہیں۔ اس سے چہرے کی کئی طرح کے مسائل سے نجات پایا جاسکتا ہے۔

چاول کے پانی کو اسکین کے لیے فیس پیک، اسکین ٹونر، اسکرب اور کئی طرح سے استعمال کیا جاسکتا ہے۔

چاول کے پانی کے استعمال سے چہرے پر قدرتی چمک آتی ہے اور ساتھ ہی اسکین صحت مند بنی رہتی ہے۔

انرجی سے بھر پور

یہ آپ کے جسم کے لیے انرجی کو بہترین سورس ہے جو کاربوہائیڈرڈ سے بھر پور ہے۔ صبح کے وقت اس پانی کو پینا انرجی بوسٹ کرنے کے لیے زبردست طریقہ ہے۔ آپ چاول کے پانی میں گھی اور نمک ڈال کر پی سکتے ہیں۔ یہ صحت کے لیے بہت اچھا ہے۔

بس چاول کو اضافی پانی کے ساتھ ابالیں اور پکائے جانے پر چھان دیں۔ ایک کانچ کی بوتل میں پانی جمع کریں اور اسے استعمال کے لیے اسٹور کریں۔ آپ پینے سے پہلے اسے تھوڑا گرم بھی کرسکتے ہیں۔

یہ امینو ایسڈ ، اینٹی آکسیڈینٹ اور معدنیات جسم میں الیکٹرولائٹ کی سطح کا توازن بنائے رکھتا ہے۔ یہ موسم گرما اور نم مہینوں میں پیئیں، جو ایک انمول ہے۔ جب لوگ اکثر پانی کی کمی کی شکایت کرتے ہیں یہ فوری آپ کو انرجی دیتا ہے۔

پیٹ کو صحت مند رکھنے میں مفید

اس کا پانی فائبر سے بھرپور ہوتا ہے اور آپ کے میٹابولزم کو بڑھانے میں مدد کرتا ہے۔ اسکے علاوہ یہ آپ کے عمل ہاضمے کو بہتر کر کے ہاضمے کو صحیح کرتا ہے اور اچھے بیکٹریا کو ایکٹیو کرتا ہے، جس سے قبض کی مشکل نہیں ہوتی۔

چاول کا پانی ، جسے کانجی، منجی یا منڈ کے طور بھی جانا جاتا ہے، نظام ہاضمہ میں مدد کرتا ہے۔ اور اسہال اور فوڈ پوائزننگ جیسے شکایت کو پرسکون کرتا ہے۔ چاول کے پانی میں معدنیات اور پروبائیوٹکس ہوتے ہیں جو آنت کے صحت کے لیے ضروری ہے۔  روایتی طور سے، یہ پیٹ کے مسائل سے متاثرہ بچوں اور خاص طور پر اسہال سے راحت دینے کے لیے فائدے مند ہے۔

بچے ہو ں یا بڑے ، دونوں کے لیے ڈائریا جیسے مسئلہ کے لیے چاول کا پانی بے حد فائدے مند ہے۔ مسئلہ کی شروعات میں ہی چاول کے پانی کا استعمال کرنا آپ کو اسکے سنگین نتائج سے بچا سکتا ہے۔

بچوں کے لیے فائدے مند

چاول شاید پہلا ٹھوس غذا ہے جو بچوں کو تب دیا جاتا ہے جب وہ دودھ چھوڑتے ہیں۔ یہ نرم، آسانی سے ہضم ہونے والی اور فوری انرجی فراہم کرتی ہے۔ چاول کے پانی میں کچھ پکے ہوئے چاول کو میش کریں اور اسے اپنے بچوں کو کھلانے کے لیے دیں۔ یہ مرکب نہ صرف ہاضمے کے لیے آسان ہے، بلکہ یہ قبض جیسے مسائل کو بھی دور رکھے گا۔

 دیگر فائدے

چاول کے پانی کو اثر انداز طور سے مہاسوں اور پھنسیوں کو کم کرنے کے لیے جانا جاتا ہے۔ آپ چاول کے پانی میں ایک کپاس کی گیند ڈوبا کر اور اسے اپنے چہرے پر ڈب کرکے فیس ٹونر کے طور پر بھی استعمال کرسکتے ہیں۔

چاول کے پانی میں موجود وٹامن اے، سی اور کے آپ کی جلد کو غذا دیتا ہے اور اسے چکنی بناتا ہے۔

اس میں موجود مرکب سیل کی تخلیق نو کو فروغ دیتا ہے اور اس طرح جلد کو ٹھیک کرنے میں مدد کرتا ہے۔

وائرل انفکیشن یا بخار ہونے پر اگر آپ چاول کے پانی کا استعمال کرتے ہیں،

تو جسم میں پانی کی کمی نہیں ہوگی۔ ساتھ ہی آپ کے جسم کو ضروری صحت مند عنصر بھی ملتے ہیں جو آپ کو جلدی ٹھیک ہونے میں مدد کریں گے۔

چاول کا پانی ہائی بلڈ پریشر کو کنٹرول کرنے میں مدد کرتا ہے،

چاول میں سوڈیم کی کم مقدار ہوتی ہے جو بلڈ پریشر اور ہائپر ٹینشن کے مریضوں کے لیے ضروری ہے۔

جسم میں پانی کی کمی ہونا ڈی۔ہائیڈریشن کے طور پر سامنے آتا ہے۔

خاص طور سے گرمیوں میں یہ مسئلہ ذیادہ ہوتا ہے۔

چاول کا پانی آپ کے جسم میں پانی کی کمی ہونے سے بچاتا ہے۔

جلد کی چمک بڑھانے کے لیے چاول کے پانی کا استعمال کیا جاسکتا ہے۔

چاول کے پانی سے آپ چمکدار جلد پا سکتے ہیں۔

اس کا پانی معدنیات ، وٹامنز ، امینو ایسڈ اور اینٹی آکسیڈینٹ فیولک ایسڈ کے ساتھ الانٹائن سے بھر ہوتا ہے۔

یہ سارے ہی غذائیت ہماری جلد اور بالوں کے لیے کسی تحفہ سے کم نہیں ہے۔

وہیں اس میں انوسیٹول ہوتا ہے، جو ایک کاربوہائیڈریٹ ہوتا ہے اور بالوں کو چمکدار اور مضبوط بناتا ہے۔

کیسے بنائے چاول کا پانی

۔ 1/2 کپ کچا چاول لیں اور اسے اچھے سے دھو لیں۔

اسکے بعد اس میں دو کپ پانی ملائیں اور آج پر چڑھا دیں۔

اسے پریشر کوکر میں نہ بنائیں۔ بلکہ کسی برتن میں بنائے۔

چاول میں جب ابال آنے لگے اور چاول کا پانی یعنی مارہ تیار۔

آپ اسے ایئرٹائیٹ ڈبے میں ڈال کر فریج میں رکھ کر کئی دن استعمال کرسکتے ہیں۔


(نوٹ: صلاح سمیت یہ مضمون صرف عام معلومات فراہم کرتی ہے۔ یہ کسی بھی طرح سے طبی رائے کا متبادل نہیں ہے، مزید معلومات کے لئے ہمیشہ کسی ماہر یا اپنے ڈاکٹر سے رجوع کریں۔ اردو پوسٹ اس معلومات کے لیے ذمہ داری قبول نہیں کرتا ہے۔ )