Type to search

بزنس

ریلائنس ریٹیل نے ‘میٹرو کیش اینڈ کیری انڈیا’ کو خریدا

میٹرو کیش اینڈ کیری انڈیا

نئی دہلی، 22 دسمبر 2022 (پریس نوٹ) ریلائنس ریٹیل وینچرز لمیٹڈ(آر آر وی ایل) جو ریلائنس انڈسٹریز لمیٹڈ کا ایک ذیلی ادارہ ہے، نے میٹرو کیش اینڈکیری انڈیا پرائیویٹ لمیٹڈ (میٹرو انڈیا)میں 100% ایکویٹی حصہ داری خریدنے کیلئےمعاہدوں پر دستخط کیے ہیں۔

 

2,850 کروڑ روپے کی یہ ڈیل قطعی ایڈجسٹمنٹ سے مشروط ہے۔
میٹرو انڈیا پہلی کمپنی تھی جس نے ملک میں کیش اینڈ کیری بزنس فارمیٹ متعارف کرایا۔ کمپنی ہندوستان میں 2003 سے کام کر رہی ہے۔

 

تقریباً 3,500 ملازمین کے ساتھ، کمپنی 21 شہروں میں 31 بڑے فارمیٹ اسٹور چلاتی ہے۔ ہندوستان میں ملٹی چینل B2B کیش اینڈ کیری ہول سیلر کا کاروبار تقریباً 3 ملین صارفین تک پہنچتا ہے، جن میں سے 1 ملین صارفین اس کے اسٹور نیٹ ورک اور eB2B ایپس کے ذریعے فعال طور پر خریداری کرتے ہیں۔ مالی سال 2021-22 میں (ستمبر 2022 کو ختم ہونے والا مالی سال)میںمیٹرو انڈیا نے 7700 کروڑ روپے ( €926 ملین) کی فروخت درجکی، جو کہ ہندوستان میں اس کی اب تک کی بہترین کارکردگی ہے۔

اس حصول کے ذریعے ریلائنس ریٹیل کو بڑے شہروں میں اہم مقامات پر واقع میٹرو انڈیا اسٹورز کا ایک وسیع نیٹ ورک ملے گا۔ جس کی وجہ سے ریلائنس ریٹیل کی مارکیٹ میں موجودگی مضبوط ہوگی۔ اس کے ساتھ رجسٹرڈ گروسری اور دیگر ادارہ جاتی صارفین کا ایک بڑا اڈہ اور ایک بہت مضبوط سپلائر نیٹ ورک بھی دستیاب ہوگا۔

اس سرمایہ کاری کے بارے میں بات کرتے ہوئے ریلائنس ریٹیل وینچرز لمیٹڈ کی ڈائریکٹر ، ایشا امبانی نے کہا، “میٹرو انڈیا کا حصول چھوٹے تاجروں اور کاروباری اداروں کے ساتھ فعال تعاون کے ذریعے مشترکہ خوشحالی کا ایک منفرد ماڈل بنانے کے لیے ہماری نئی تجارتی حکمت عملی کے مطابق ہے۔ میٹرو انڈیا ہندوستانی B2B مارکیٹ میں ایک سرکردہ اور غالب کھلاڑی ہے اور اس نے ایک ٹھوس ملٹی چینل پلیٹ فارم بنایا ہے۔ ہمیں یقین ہے کہ ہندوستانی مرچنٹ اور گروسری ایکو سسٹم اور میٹرو انڈیا کے نئے اسٹورز کے بارے میں ہماری سمجھ چھوٹے کاروباروں کے لیے ایک اعزاز ثابت ہوگی۔

میٹرو اے جی کے سی ای او ڈاکٹر سٹیفن گریبل نے کہا، “ہمیں یقین ہے کہ ہمیں ریلائنس کی شکل میں ایک موزوں پارٹنر ملا ہے۔ مستقبل میں میٹرو انڈیا کی کامیابی کے ساتھ قیادت کرنے کے لیے ریلائنس اچھی پوزیشن میں ہے۔ اس سے ہمارے صارفین اور ہمارے ملازمین دونوں کو فائدہ ہوگا۔

لین دین کچھ ریگولیٹری اور دیگر روایتی اختتامی شرائط کے ساتھ مشروط ہے اور مارچ 2023تک پورے ہونےکی امید ہے۔

Tags:

You Might also Like