Type to search

قومی

مودی کا قوم سے خطاب ،22 مارچ کو شہریوں سے کی جنتا کرفیو کی اپیل

rewa-solar-project

ہندوستان میں کورونا وائرس سے نپٹنے کے لیے اٹھائے گئے قدموں اور حکومت کی تیاریوں کو لیکر آج پی ایم مودی ملک کو خطاب کیا،
پی ایم مودی نے کہا ، ‘پچھلے دو ماہ سے ہم دنیا سے مسلسل پریشان کن خبریں سن اور دیکھ رہے ہیں۔ دو مہینوں میں ہندوستان کے عوام نے اس وبا کا مضبوطی سے مقابلہ کیا ہے۔ اس وائرس نے پوری دنیا کو بحران میں ڈال دیا ہے‘۔ پی ایم مودی نے 22 مارچ کو جنتا کرفیو کی اپیل کی ہے۔ انہوں نے شہریوں سے اتوار کی صبح 7 بجے سے رات 9 بجے تک گھر میں ہی رہنے کی اپیل کی۔
انہوں نے کہا کہ صبح 7 بجے سے رات 9 بجے تک لوگ گھر پر ہی رہیں۔ لوگ گھروں سے باہر نہ نکلیں۔ انہوں نے اپیل کی کہ 10 ساتھیوں کو جنتا کرفیو کے بارے میں بتائیں۔ اتوار کی شام 5 بجے سائرن بجایا جائے گا۔ حکومت نے وزیر خزانہ کی سربراہی میں کووڈ 19 اقتصادی ٹاسک فورس کے قیام کا فیصلہ کیا ہے۔
پی ایم مودی نے تاجروں سے یہ بھی اپیل کی کہ اگر ان کے کارکنان کام پر نہ آ پائیں تو ان کی تنخواہ نہ کاٹیں۔ میں ملک کے عوام کو یقین دلاتا ہوں کہ ملک میں کھانے ، دودھ اور دیگر سامان کی کمی نہ ہو ، حکومت اس کے لئے کوششیں کر رہی ہے۔ گھر پر سامان جمع کرنے کا کام نہ کریں۔
مودی نے عوام سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہر ہندوستانی کو محتاط رہنے کی ضرورت ہے، پی ایم نے کہا کہ پوری دنیا اس وقت بحران کے سنگین دور سے گذر رہا ہے- کبھی کوئی قدرتی بحران آتا ہے تو کوئی ملک یا ریاستوں تک محدود رہتا ہے، یہ آفت دنیا بھر کے لوگوں کو بحران میں ڈال دیا ہے، عالمی جنگ کے وقت بھی اتنی پریشانی نہیں ہوئی تھی جتنی ابھی کورونا وائرس کی وجہ سے ہے، پچھلے دو مہینوں سے ہم کورونا وائرس کی خبریں سن رہے ہیں، دیکھ رہے ہیں، عوام نے بچنے کی کوشش کی، پھر بھی پریشانی بڑھ رہی ہے، پی ایم نے کہا کہ عالمی وبا کورونا وائرس سے پرسکون ہوجانا صحیح نہیں ہے-ہمیں محتاط رہنے کی ضرورت ہے، آپ سے ہم نے جب بھی جو بھی مانگا ہے ، عوام نے مایوس نہیں کیا ہے، 130 کڑوڑ عوام سے کچھ مانگنے آیا ہوں-
مودی نے کہا کہ مجھے آپ کے آنے والے کچھ ہفتے چاہیئے، آپ کا انے والا کچھ وقت چاہئے، ابھی تک کورونا آفت سے بچنے کے لیے کوئی حل نہںی ڈھونڈ پایا ہے، نہ ہی کوئی ویکسین بن پائی ہے، دنیا کے جن ملکوں میں کورونا کا اثر جہاں کورونا کا بحران معمول بات نہیں ہے، جب بڑے بڑے اور ترقی یافتہ ملک اس سے متاثر ہے، تو ایسے میں یہ سوچنا کہ ہندوستان پر اسکا اثر نہیں پڑے گا تو غلط ہے، دو چیزیں ضروری ہے، عزم اور تجمل سے اپنا عزم اور مضبوط کرنا ہوگا، کہ اس عالمی وبا کو روکنے کے لیے ایک شہری کے ناطے ہم مرکز اور ریاست کی ہدایات کو پوری طرح سے عمل کریں گے، آج ہمیں یہ عہد لینا ہوگا کہ ہم خود سے متاثر ہونے سے بچائیں گے-
اس سے پہلے مودی نے اعلی سطحی اجلاس میں حصہ لیا، اور وائرس کی روک تھام کے لیے اٹھائے جارہے قدموں کا جائزہ لیا، انہوں زور دیتے ہوئے کہا کہ انفرادی سطح پر مقامی لوگوں ، اداروں کے ذریعہ سے اس مسئلے سے نمٹنے میں مدد لی جانی چاہیئے-

Tags:

You Might also Like