Type to search

قومی

بیوہ، طلاق شدہ خواتین بھی سروگیسی سے ماں بن سکیں گی

نئی دہلی، 27فروری (اردو پوسٹ انڈیا ڈاٹ کام) وزیر اعظم نریندر مودی کی زیرصدارت اجلاس میں کابینہ نے نیشنل ٹیکنیکل ٹیکسٹائل مشن کو منظوری دے دی ہے۔ ٹیکنیکل ٹیکسٹائل مشن کے ساتھ ہی سروگیسی (ریگولیشن) ترمیمی ایکٹ کو بھی منظوری دے دی گئی ہے- اس ایکٹ کے ذریعہ سروگیسی قانون کو اور سخت بنایا گیا ہے- اسکے علاوہ فوڈ پروسیسنگ انڈسٹری کے دو انسٹی ٹیوٹ کو قومی انسٹی ٹیوٹ کا درجہ دینے پر بھی فیصلہ ہوا ہے-
حکومت نے سروگیسی ریگولیشن بل 2019 میں تبدیلی کرتے ہوئے بیوہ اور طلاق شدہ خواتین کو بھی سروگیسی کے ذریعہ ماں بننے کا حق دینے کا فیصلہ کیا ہے۔

وزیراعظم نریندر مودی کی صدارت میں بدھ کو مرکزی کابینہ کی ہوئی میٹنگ میں اس بل کی نئی شکل و صورت میں تبدیلی کو منظوری دی گئی۔ اطلاعات و نشریات کے وزیر پرکاش جاوڈیکر نے بتایا کہ گزشتہ برس پارلیمنٹ میں پیش بل لوک سبھا میں منظور ہوچکا تھا۔ راجیہ سبھا میں جب بل بحث کے لئے گیا تو وہاں سے غور و خوض کے لئے سلیکٹ کمیٹی کو بھیجنے کا فیصلہ کیا گیا۔ سلیکٹ کمیٹی نے اپنی رپورٹ سونپ دی ہے اور اس کی تمام سفارشات کو قبول کرلیا گیا ہے۔

خواتین اور اطفال کی فلاح وبہبود کی وزیر اسمرتی ایرانی نے بتایا کہ ایک اہم تبدیلی یہ کی گئی ہے کہ اب بیواوں اور طلاق شدہ خواتین کو سروگیسی کے ذریعہ اولاد حاصل کرنے کا حق ہوگا۔