Type to search

صحت

کیا ہے نومو فوبیا، جسکے تیزی سے شکار ہورہے ہیں ہندوستانی نوجوان

ہیلتھ ڈسک،(اردو پوسٹ انڈیا ڈاٹ کام) ہندوستان میں ٹکنالوجی اور گیجٹ اور اسمارٹ فون کی لت خطرناک حد تک بڑھ رہی ہے اور اس کی وجہ سے نوجوانوں میں  نومو فوبیا نامی بیماری کا شکار تیزی سے ہورہے ہیں۔ یہ مستقبل میں ان کے لئے مہلک ثابت ہوسکتا ہے۔

تقریبا تین بالغ صارفین لگاتار ایک ساتھ ایک سے زیادہ آلات کا استعمال کرتے ہیں اور اپنے 90 فیصدی آلات کے ساتھ گذارتے ہیں۔ یہ بات ایڈوب کے ایک تحقیق میں سامنے آئی ہے۔

تحقیق کے نتائج نے بھی اشارے دیئے ہیں کہ 50 فیصدی صارفین موبائل پر سرگرمی شروع کرنے کے بعد پھر کمپیوٹر پر کام شروع کردیتے ہیں۔

ہندوستان میں اس طرح اسکرین سوئچ کرنا عام بات ہے۔ موبائل فون کا لمبے وقت تک استعمال گردن میں درد، آنکھوں میں سوکھا پن، کمپیوٹر ویژن سنڈروم اور بے خوابی کی وجہ بن سکتی ہے۔

20 سے 30 سال کی عمر کے تقریبا 60 فیصدی نوجوانوں کو اپنا موبائل فون کھونے کی خدشہ رہتا ہے۔ جسے نومو فوبیا کہا جاتا ہے۔

ہارٹ کیئر فاؤنڈیشن آف انڈیا کے صدر پدما شری ڈاکٹر کے کے اگروال کہتے ہیں، ہمارے فون اور کمپیوٹر پر آنے والے نوٹیفکیشن ، کمپنی اور دیگر الرٹ ہمیں لگاتار انکی طرف دیکھنے کے لیے مجبور کرتے ہیں۔

یہ اسی طرح کے عصبی راستے کو محرک کرنے جیسا ہوتا ہے، جیسا کسی شکاری کی طرف ایک حملے کے دوران یا کچھ خطرے کا سامانا کرنے پر ہوتا ہے۔

اس کا مطلب یہ ہے کہ ہمارا دماغ لگاتار سرگرم اور محتاط رہتا ہے لیکن غیر معمولی طرح سے۔

انہوں نے کہا کہ ہم لگاتار اس سرگرمی کی تلاش کرتے ہیں، اور اسکے کمی میں بے چین، مشتعل اور اکیلا محسوس کرتے ہیں۔ کبھی کبھی ہاتھ سے پکڑی اسکرین پر نیچے دیکھنے یا لیپ ٹاپ کااستعمال کرتے وقت گردن کو باہر نکالنے سے ریڈھ پر بہت دباؤ پڑتا ہے۔

ہم ہر دن مختلف آلات پر جتنے گھنٹے گذارتے ہیں، وہ ہمیں گردن، کندھے، پیٹ، کہونی، کلائی اور انگھوٹے کے لمبے اور پرانے درد سمیت کئی مسائل کے شکار بناتے ہیں۔

اسمارٹ فون کی لت روکنے کے لئے کچھ ٹپس

* الیکٹرانک کرفیو: مطلب سونے سے 30 منٹ قبل کسی بھی الیکٹرانک گجیٹ کااستعمال نہ کرنا۔

فیس بک کی چھٹی:ہر تین مہینے میں 7 دن کے لیے فیس بک استعمال نہ کریں۔

سوشل میڈیا فاسٹ: ہفتہ میں ایک پورے دن سوشل میڈیا سے بچیں۔

اپنے موبائل فون کا استعمال صرف تب کریں جب گھر سے باہر ہوں۔

ایک دن میں تین گھنٹے سے زیادہ کمپیوٹر کا استعمال نہ کریں۔

اپنے موبائل ٹاک ٹائم کو ایک دن میں دو گھنٹےسے زیادہ تک محدود رکھیں۔

اپنے موبائل کی بیٹری کو ایک دن میں ایک سے زیادہ بار چارج نہ کریں۔

Tags: