Type to search

تلنگانہ

حیدرآباد: 423 سالوں میں پہلی بار مکہ مسجد میں نہیں ہوئی الوداع جمعہ کی نماز

حیدرآباد،24مئی (اردو پوسٹ انڈیا ڈاٹ کام) دنیا بھر میں پھیلے کورونا وبا نے برسوں سے چلی آرہی رسومات بدل دی ہے۔ ہندوستان میں پھیلے کورونا وائرس کی وجہ سے جہاں مذہبی مقامات کو بند رکھنے کے حکم ہیں، تو وہیں اس وجہ سے مساجد میں کافی وقت سے جماعت میں نماز بھی نہیں ہو پارہی ہے۔

ایسے میں رمضان المبارک کے آخری جمعہ میں الوداع جمعہ کی نماز بھی ذیادہ تر مساجدوں میں جماعت میں نہیں پڑھی گئی۔ وہیں ایسا نہ ہونے سے حیدرآباد کی مکہ مسجد میں 423 سالوں میں یہ پہلی بار ہوا جب جماعت میں الوداع جمعہ کی نماز نہیں ہوئی۔ خبر ہے چار سے پانچ لوگوں کی ساتھ جمعہ کی نماز ادا کی گئی۔

آپکو بتادیں کہ شہر حیدرآباد میں الوداع جمعہ کا منظر عید کا منظر پیش کرتا ہے۔ چاروں طرف سے صرف انسانی سروں کا سمندر آتا تھا ، لیکن چارمینار کی تاریخ میں یہ پہلا واقع گذرا ہے کہ اسطرح کا منظر اس سال دیکھنے کو نہیں ملا۔

ہمیشہ الوداع جمعہ کے پیش نظر چارمینار کے اطراف کے سڑکوں پر صاف صفائی کی جاتی تھی ، کیونکہ مصلیوں کی تعداد اتنی ہوتی ہے کہ چارمینار کے اطراف کی سڑکیں اپنی تنگ دامنی کا شکوہ کرتی۔

بتادیں رمضان کے پورے مہینے میں چارمینار کے دامن میں لوگ شاپنگ کرنے اور بازار کی رونق دیکھنے کے لیے آتے تھے، لیکن یہ سال ہر چھوٹے اور بڑے کاروبار کرنے والوں کو نقصان ہوا، اور کئی لوگ بے روزگار ہوئے۔

ریڈ زون میں چارمینار ایریا
ایسے میں حیدرآباد کی تاریخی چارمینار کے آس پاس اور مکہ مسجد میں رمضان کے آخری جمعہ کو سنسان دیکھا گیا۔ بتادیں کہ چارمینار والے ایریا کو ریڈ زون کے طور نشاندہی کی گئی۔ کورونا وائرس اور لاک ڈاؤن کی وجہ سے مکہ مسجد میں کم سے کم لوگوں کے درمیان الوداع جمعہ کی نماز پڑھی گئی۔

حیدرآباد شہر کے پولیس کمشنر انجنی کمار نے پولیس اہلکاروں کے ساتھ لاک ڈاؤن کو یقینی کے لیے چارمینار اور پرانے شہر میں ڈیرا ڈالے رکھا، وہیں شب قدر میں بھی ان علاقوں میں خاموشی دیکھی۔ لوگوں نے گھروں میں ہی عبادت کی۔

سال 1591 میں شہر کی بنیاد رکھے جانے کے بعد چارمینار پہلی مسجد تھی، تاریخ ساز کہتے ہیں کہ پچھلے 4صدیوں سے یہ منفرد کنسٹرکشن عید تقریب کے لیے گواہ ہے۔ صرف ہسپانوی انفلوئنزا اور ہیضہ کی وباء کے دوران کے وقت یہ تاریخی ڈھانچہ ویران نظر آیا تھا۔

اس درمیان شہر کے مولوی اور علما نے بھی مسلم کمیونٹی کو اپنے گھر پر عید منانے اور حکومت کی گائیڈ لائنس پر عمل کرنے کو کہا ہے، جسکے تحت ریاست میں سبھی طرح کی مذہبی اجتماعات پر پابندی عائد کی ہیں۔