Type to search

تلنگانہ

کورونا وائرس: راتوں رات ماسک کی قیمتوں میں اضافہ

Wearing masks is now compulsory in TS

حیدرآباد،5مارچ(اردو پوسٹ انڈیا ڈاٹ کام) کوروناوائرس کی روک تھام کے لیے ماسک ضروری ہوگیا ہے۔ ضروری ہی نہیں جسم کا اعضا بن گیا ہے۔ سبھی تجزیہ کار بھی ماسک کے استعمال کی تجویز دے رہے ہیں۔ حالانکہ ماسک کی قیمت میں اچانک سےاضافہ ہوگیا ہے۔ ملک بھر میں ماسک کی قیمت میں کافی اضافہ ہوگیا ہے۔

بات حیدرآباد کی کریں تو شہر کے کئی جگہوں  پر نو اسٹاک کے بورڈ لگے ہیں۔ جہاں بھی ہے وہاں میڈیکل شاپ والے لوگوں کی ضروری اور مجبوی کافائدہ اٹھانے لگے ہیں۔  کم سے کم دو سے پانچ روپے کے ماسک کو 50 سے لیکر 100 تک فروخت کیا جارہا ہے۔ یہ حال آئی ٹی کوریڈور والے گچی باؤلی علاقے کا ہے۔

چہارشنبہ کو گچی باؤلی میں ایک آئی ٹی کمپنی میں ایک خاتون میں کورونا وائرس کے علامات پائے جانے کی وجہ سے انتظامیہ نے اسے ہاسپٹل بھیج دیا گیا۔ اسکے تھوڑی دیر بعد ہنگامہ مچ گیا کہ آئی ٹی کمپنی نے سبھی ملازمین کو آفس خالی کرکے گھر جانے کی تجویز دی ہے۔ اسکے بعد لوگ میڈیکل شاپس کا راستہ پکڑنے لگے اور وہاں جاکر ماسک کی مانگ کرنے لگے۔ اسکے تھوڑی ہی دیر میں ماسک کے نو اسٹاک کےبورڈ لگ گئے۔

جہاں پر بھی 50 سے لیکر 100 روپے میں فروخت کررہے ہیں پھر بھی انکےمیڈیکل شاپس میں نو اسٹاک کہتےہوئے پائے گئے۔ اسکی وجہ سے آئی ٹی ملازمین ، بھائی صاحب کتنا بھی لے لو، پر ایک ماسک دو، کہتے ہوئے دیکھا گیا ہے۔ انکے میڈیکل شاپس میں صبح سے لیکر شام تک لمبی لمبی قطار دیکھی گئی۔

Tags:

You Might also Like