Type to search

تلنگانہ

تلنگانہ میں لاک ڈاؤن مزید 10 دن کے لیے بڑھا، صبح 6 سے 1 بجے تک نرمی

تلنگانہ لاک ڈاؤن

حیدرآباد ، 30 مئی (اردو پوسٹ انڈیا ڈاٹ کام) تلنگانہ حکومت نے کوویڈ 19 کو پھیلنے سے روکنے کے لئے اتوار کو ہوئی کابینہ میٹنگ میں لاک ڈاؤن کی مدت میں اضافہ کرتے ہوئے اسے مزید 10 دنوں کی توسیع کردی گئی ہے۔

 

 

بتادیں کہ لاک ڈاؤن میں صبح ؐ6 سے 10 بجے تک رعایت تھی، اب اسے بڑھا کے دوپہر 1 بجے تک کردیا گیا ہے۔

کابینہ اجلاس سے پہلے تک سوشل میڈیا پر لاک ڈاؤن کو لیکر خبر چل رہی تھی کہ لاک ڈاؤن 7 جون تک بڑھ سکتا ہے۔ لیکن لاک ڈاؤن 10 دن کے لیے بڑھایا گیا ہے۔ جو 31 مئی سے 9 جون تک لاک ڈاؤن رہے گا۔

 

کے ٹی آر نے اپنے ٹیوٹ میں بتایا کہ ، کابینہ نے فیصلہ کیا ہے کہ اعلی تعلیم کے لئے بیرون ملک جانے والے طلباء کو ترجیحی طور پر ویکسینیشن دی جائے گی تاکہ وہ محفوظ طریقے سے سفر کرسکیں، تفصیلات کے ساتھ ہدایت نامہ جلد جاری کیا جائے گا-

 

بتادیں کہ 12 مئی کو لاگو کیا گیا لاک ڈاؤن 22 مئی تک کیا گیا تھا پھر اسے 30 مئی تک کیا گیا تھا۔

تلنگانہ کے وزیراعلی کے چندر شیکھر راؤ نے ریاست میں لاک ڈاؤن کی مدت 10 دنوں تک بڑھانے کا فیصلہ کیا ہے۔

تلنگانہ کے وزیراعلی کے چندر شیکھر راؤ آج یعنی 30مئی 2021 کی دوپہر 2 بجے لاک ڈاؤن میں اضافےاور کئی دیگر مسائل پر بات چیت کرنے کے لیے کابینہ میٹنگ بلائی۔ شام پانچ تک بھی لاک ڈاؤن کو لیکر کوئی فیصلہ نہیں کیا گیا تھا۔

کابینہ کے اجلاس سے قبل، حیدرآباد کے رکن پارلیمنٹ اسدالدین اویسی نے اتوار کے روز تلنگانہ حکومت سے ریاست میں موجودہ تالا بندی (لاک ڈاؤن) کو نہیں بڑھانے کی اپیل کی۔

انہوں نے ایک بعد ایک ایک پانچ ٹیوٹ کرتے ہوئے تلنگانہ حکومت پر تنقید کی ہے، اویسی نے لکھا کہ لاک ڈاؤن سے غریبوں کی زندگی برباد ہورہی ہے۔ جیسا کہ اعداد وشمار سے پتہ چلتا ہے کہ 12 مئی کو لاک ڈاؤن لاگو ہونے سے پہلے ہی کوویڈ کے کیس بہت کم ہورہے تھے، ایسے میں واضح ہے کہ کورونا کے کیسوں کو روکنے میں لاک ڈاؤن مددگار نہیں ہے۔

انہوں نے آگے کہا کہ لاک ڈاؤن کے بنا کوویڈ کا مقابلہ کیا جاسکتا ہے۔ اویسی نے وزیراعلی کے سی آر سے شام 6 بجے سے پابندی لگانے کی گذارش کی ہے۔ انہوں نے اپنے ٹیوٹ میں لکھا کہ لاک ڈاؤن کو مزید نہ بڑھائے۔ بلکہ اگر بھیڑ کو کم کرنا ہے تو شام کے کرفیو یا کوویڈ گروپ کے لیے منی لاک ڈاؤن پر غور کرسکتے ہیں۔ لیکن قریب 3.5 کروڑ لوگوں سے صرف چار گھنٹے کی لاک ڈاؤن چھوٹ کے ساتھ ہفتوں تک جینے کی امید کرنا بالکل بھی صحیح نہیں ہے۔

Tags:

You Might also Like