Type to search

فیشن

کائلی جینر نے شیئر کی نیوڈ فوٹو

کائلی جینر

فیشن ڈسک، 13 اکتوبر (اردو پوسٹ انڈیا ڈاٹ کام) ٹی وی اسٹار کائلی جینر نے اپنے کاسمیٹک برانڈ کے پروموشن سے انٹرنیٹ پر سنسنی مچا دی ہے-

کائلی نے کچھ دنوں پہلے میٹ پرینٹیڈ کاسٹیوم میں اپنے کاسمیٹک کی تشہیر کی تھی- اب کائلی نے بنا کپڑوں کے نیوڈ ہوکر اپنے کاسمیٹک کلکشن کو پروموٹ کیا ہے-

 

View this post on Instagram

 

A post shared by Kylie 🤍 (@kyliejenner)

 

لیکن کائلی نے جو پروموشن فنڈا اپنایا ہے، وہ لوگوں کو پسند نہیں آیا، یوزرس کے خوب کمنٹ آئے ہیں-

ان تصویروں میں کائلی جینر کے پورے جسم اور فلور پر خون جیسا پینٹ دیکھا جاسکتا ہے، وائٹ بیک ڈراپ میں خون سے سنی کائلی کی یہ تصویریں ڈراونے ہیں، انہوں نے اپنی دوسری تصویر اسی شاٹ کا کلوز اپ دیا ہے-

 

View this post on Instagram

 

A post shared by Kylie 🤍 (@kyliejenner)

 

کائلی کی یہ وائرڈ فوٹو ایک ہارر فرنچائزی کے ساتھ کولابریشن کے لیے شوٹ کیے ہیں، اس میں کائلی ویٹ ہیئر اسٹائل میں اپنی باڈی کو ہاتھوں سے کور کرتی نظر آرہی ہے-

کائلی جینر کی ان تصویروں کا مقصد بھلے ہی پروموشن ہو، مگر یوزرس کو یہ زرا بھی پسند نہیں آیا- ایک یوزر نے لکھا – یہ کیا کیا ہے تم نے؟

حال ہی میں انہوں نے میٹ پرینٹ آوٹ فٹ میں بھی کئی فوٹوز شیئر کیے تھے، انہوں نے اپنے ہیلوین کے لیے ایک نئی ڈریس لائن کی شروعات کی ہے- اسکا نام کائلی نائٹ میر ان ای ایل ایم اسٹریٹ رکھا گیا ہے-

 

View this post on Instagram

 

A post shared by Kylie 🤍 (@kyliejenner)

 

بتادیں کہ کائلی جینر جلد ہی اپنے دوسرے بچے کی ماں بننے والی ہے، انہوں نے اپنے 24ویں پیدائش پر کچھ تصویریں شیئر کی تھی، جس میں وہ اپنا بیبی بمپ چھپانے کی کوشش کرتی دیکھی، لیکن لوگوں نے اسے نوٹس کرلیا اور پھر کائلی کے حمل کی خبریں آنے لگی-

اس سے پہلے نیویارک فیشن ویک میں کائلی جینر نے بلیک کلر ڈریس کو پہن کر اپنے بیبی بمپ کو فلانٹ کیا تھا-

دس اگسٹ 1997 میں لاس اینجلس ، کیلیفورنیا میں پیدا ہوئی کائلی جنیز ٹی وی کی مشہور کیم کارداشیان ، کلویی کارداشیان اور کورٹنی کاراشیان کی سوتیلی بہن ہے، جینر کو فوربز کی جانب سے پہلی بار ارب پتی افراد کی فہرست میں شامل کیا گیا ہے۔ کائیلی نے کاسمیٹکس کا آن لائن کاروبار شروع کیا، جس میں لپسٹک اور لپ لائینر  دستیاب ہے-

Photos: @kyliejenner_

Tags:

You Might also Like

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *