Type to search

بزنس

آپشن ٹریڈنگ میں آئی ٹی ایم، اے ٹی ایم، او ٹی ایم کیا ہیں؟ جانیں

آپشن ٹریڈنگ

بزنس ڈسک، ( بشکریہ این ڈی ٹی وی ہندی) شیئر بازار میں ٹریڈنگ کے ذریعہ جلد پیسہ کمانے کے لیے لوگ آپشن ٹریڈنگ کا سہارا لے رہے ہیں۔ یہاں خطرہ بھی بہت ذیادہ ہے۔ اعداد وشمار بتاتے ہیں یہاں پر 90 فیصد لوگ نقصان ہی اٹھاتے ہیں۔

 

 

صرف چند جانکار ہی اس ٹریڈنگ کے ذریعہ فائدہ اٹھا پاتے ہیں۔ اس لیے اس قسم کی ٹریڈنگ میں اترنے سے پہلے کافی مشق کرنا چاہیے اور ٹھیک سے معلومات لینا چاہیئے۔ ضروری ہو تو کسی ماہر کی صلاح کے بعد ہی اس قسم کی ٹریڈنگ میں قدم رکھنا چاہیئے۔

اچھا تو یہ ہو کہ پہلے خود اچھے سے سمجھا جائے پھر کسی ماہر کی رہنمائی میں کام کی کوشش کی جائے اور پھر آپشن ٹریڈنگ میں قدم رکھا جائے۔ آج بات کرتے ہیں آئی ٹی ایم، اے ٹی ایم، اور او ٹی ایم کی۔

 

 

جو پیسہ زیادہ لگائے گا وہ زیادہ کمائے گا۔

سب سے پہلے یہ سمجھاتے ہی ںکہ انکا پورا نام کیا ہے۔ آئی ٹی ایم یعنی ان دی منی، اے ٹی ایم کا مطلب ایٹ دی منی، اور او ٹی ایم کا مطلب آوٹ آف دی منی۔

سمجھ لیں کہ شیئر بازار میں آئی ٹی ایم، اے ٹی ایم اور او ٹی ایم الگ الگ اسٹرائیک قیمت کے آپشن کنٹراکٹ ہوتے ہیں جو کال یا پٹ کچھ بھی ہوسکتے ہیں۔

کوئی بھی آئی ٹی ایم ، اے ٹی ایم اور او ٹی ایم پر کال آپشن (سی ای) بھی خرید سکتے ہیں اور پٹ آپشن (پی ای) بھی خرید سکتے ہیں۔ ان تینوں ہی آپشن کنٹراکٹ میں پریمیم کی قیمت الگ الگ ہوتے ہیں۔ ایسا کیوں ہوتا ہے اسکے بارے میں ہم آگے بات کرنے والے ہیں۔

 

 

آپشن خریدنا اور آپشن سیلنگ

سب سے پہلے آپشن ٹریڈنگ کے بارے میں تھوڑی بات کرلیتے ہیں، آپشن ٹریڈنگ میں آپشن بائنگ یا پھر آپشن سیلنگ کی جاتی ہے۔

اگر آپشن بائی کیا جاتا ہے تو آپشن بائر کہلاتے ہیں اور اگر آپشن سیل کرتے ہیں تو آپشن سیلر کہلاتے ہیں۔

آپشن ٹریڈنگ میں ذیادہ تر ٹریڈر (قریب 80 فیصدی تک) آپشن بائنگ کرتے ہیں اور صرف 20 فیصدی آپشن سیلنگ کرتے ہیں۔

آپشن بازار کی تعداد ذیادہ ہونے کی وجہ یہ ہے کہ آپشن بائنگ کوئی بھی کرسکتا ہے کیونکہ یہ بہت ہی کم پیسوں میں ہوجاتی ہے۔ وہیں آپشن سیلنگ میں لاکھوں روپے کی ضرورت ہوتی ہے۔

یہاں ایک بات اور سمجھانے کی ہے کہ آپشن ٹریڈنگ میں 80 پیسہ صرف آپشن سیلر کماتے ہیں جبکہ 20 فیصد آپشن بایئر ہی پیسہ کماتے ہیں۔ ظاہر سی بات ہے جو ذیادہ پیسہ لگائے گا وہ ذیادہ پیسہ کمائے گا۔

 

ایک کا نقصان دوسرے کا فائدہ

آپشن بائیر (خریدار) اور آپشن سیلر (بیچنے والے) کی سوچ ایک دوسرے سے بالکل الگ ہوتی ہے۔ آپشن ٹریڈنگ میں ایک ٹریڈر کا صرف تبھی فائدہ ہوگا جب دوسرے کا نقصان ہوگا۔

یہاں یہ سمجھ لیں کہ جہاں ذیادہ فائدہ ہے وہاں پر ذیادہ رسک بھی ہے۔ یہاں پر نقصان بھی بڑا ہوتا ہے۔ یعنی آپشن بائنگ ہو یا آپشن سیلنگ دونوں کے اپنے اپنے فائدے اور نقصان ہے۔

ایک اور اہم بات جب بازار اوپر جاتا ہے تو کال آپشن یعنی سی ای خریدنے پر فائدہ ہوتا ہے اور اگر مارکٹ نیچے جاتا ہے تو پٹ آپشن پی ای خریدنے پر فائدہ ہوتا ہے۔ وہیں، آپشن سیلنگ میں اسکا بالکل الٹا ہوتا ہے۔ اگر مارکٹ اوپر جائے گی تو پی ای کو سیل کریں گے اور اگر لگتا ہے کہ مارکٹ نیچے جائے گا سی ای کو سیل کریں گے۔

 

 

 

اب ہم واپس آئی ٹی ایم، اے ٹی ایم، او ٹی ایم کو سمجھتے ہیں۔

یہاں ایک مثال کے طور یہاں سمجھیں۔ فرض کریں کہ ابھی بینک نفٹی 42000 پر چل رہا ہے مطلب بینک نفٹی کا سپاٹ قیمت 42000 ہے۔ تو یہاں سے صرف دو چیزیں ہو سکتی ہے یا تو بنک نفٹی اوپر جائے گا یا پھر بنک نفٹی نیچے جائے گا۔

اگر بنک نفٹی اوپر جائے گا تو کال آپشن یعنی سی ای خریدیں گے۔ کوئی بھی بروکر ایپ جسکا ٹریڈر استعمال کرتے ہیں وہاں پر ایف اینڈ او والے آپشن میں جاکر بنک نفٹی 42000 سی ای ٹائپ کیا جاسکتا ہے۔ نیچے بنک نفٹی 42000 کے سبھی کال آپشن سی ای ملیں گے۔

ساتھ ہی اسکی ایکسپائری بھی خریدگی، اس کال آپشن پر دیکھنا ہوگا کہ کتنا پریمیم ہے۔ عام طور پر دیکھا جاستا ہے کہ کوئی یہاں بنک نفٹی کے کرنٹ پرائس 42000 سے اوپر (او ٹی ایم پر) جاتے ہیں تو پریمیم کے پرائس کم ہوتے جاتے ہیں اور نیچے (ائی ٹی ایم) جانے پر پریمیم کے پرائس بڑھتے جاتے ہیں۔

 

 

اگر بنک نفٹی 42000 پر چل رہا ہے تو یہ اے ٹی ایم ہے یعنی ایٹ دی منی آپشن ہے، 42000 سے نیچے (41900, 41800, 41700….) جتنے بھی آپشن ہونگے وہ سبھی آئی ٹی ایم یعنی ان دی منی آپشن کہلائیں گے۔ اور 42000 سے اوپر (42000 (42100, 42200, 42300….) جتنے بھی آپشن ہونگے وہ سبھی او ٹی ایم یعنی آوٹ دی منی آپشن کہلائیں گے۔

اب آپ سمجھ گئے ہوں گے کہ نفٹی، بنک نفٹی یا کسی بھی اسٹاک کی موجودہ اسٹرائیک پرائس ہوتا ہے وہ اے ٹی ایم کہلاتے ہیں، اس سے نیچے کی تمام اسٹرائیک پرائس کو آئی ٹی ایم اور اس سے اوپر کی تمام اسٹرائیک پرائس او ٹی ایم کہلاتے ہیں۔

 

 

 

لاٹ میں ہوتا ہے ٹریڈ

ایک اور ضروری بات۔ جب آپشن ٹریڈنگ کی جاتی ہے تو لاٹ میں شیئر خریدنے پڑتے ہیں جیسے ۔ بنک نفٹی کا ایک لاٹ 25 کا ہوتا ہے۔ یعنی کسی کو ٹریڈ لینا ہے تو کم سے کم ایک لاٹ یعنی 25 یونٹ خریدنے ہونگے۔

وہیں نفٹی کا ایک لاٹ میں 50 یونٹ کا ہوتا ہے۔ یعنی نفٹی میں آپشن ٹریڈنگ کرنے کے لیے کم سے کم 50 یونٹ خریدنا ہوگا۔

مطلب صاف ہے کہ بنک نفٹی کا 42000 کا اے ٹی ایم کال آپشن 269 روپے کا ہے تو اسے خریدنے کے لیے  269×25 = روپے 6725 ادا کرنے ہوں گے۔ ایک بار پھر بتادیں کہ آپشن ٹریڈنگ میں جتنا ذیادہ پیسہ لگائیں گے اس میں رسک اور ریوارڈ دونوں ہی اتنے ہی ذیادہ ہونگے۔

 

 

پریمیم کو سمجھ لیں۔

اگر پریمیم کی بات کی جائے تو ۔ آئی ٹی ایم میں سب سے ذیادہ پریمیم دینا پڑتا ہے، اے ٹی ایم میں اس سے کم اور او ٹی ایم خریدنے کے لیے سب سے کم پیسہ دینا پڑتا ہے۔

یہ بھی جان لیں کہ سب سے ذیادہ رسک آئی ٹی ایم میں ہوتا ہے۔ اس سے کم اے ٹی ایم میں اور سب سے کم رسک او ٹی ایم میں ہوتا ہے۔

سب سے ذیادہ ریوارڈ آئی ٹی ایم میں ہوتا ہے۔ اس سے کم اے ٹی ایم میں اور سب کم منافع او ٹی ایم میں ملتا ہے۔

(بشکریہ : یہ مضمون این ڈی ٹی وی ہندی ویب سائٹ سے اردو جاننے والوں کے لیے ترجمہ کے ساتھ نشر کیا جارہا ہے۔)

Tags:

You Might also Like