Type to search

تلنگانہ

شہریت قانون کے خلاف تلنگانہ اسمبلی میں قرار دات منظور کی جائے گی: کے سی آر

 لمبی خاموشی کے بعد کے سی آر کا اعلان،مرکزی حکومت کا 100 فیصدی غلط فیصلہ


حیدرآباد،25جنوری(اردو پوسٹ انڈیا ڈاٹ کام) تلنگانہ کے کے وزیر اعلی کے چندرشیکھر راؤ نے ہفتہ کے روز شہریت ترمیمی ایکٹ (سی اے اے) پر اپنی خاموشی توڑتے ہوئے کہا کہ ریاستی اسمبلی جلد ہی متنازعہ قانون سازی کے خلاف قرارداد پاس کی جائے گی۔
انہوں نے آج ریاست میں بلدیات اور کارپوریشن کے انتخابات کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ اسمبلی کے بجٹ سیشن میں شہریت ترمیمی قانون کے خلاف قرارداد منظورکی جائے گی۔

راؤ نے کہا سی اے اے مرکزی حکومت کا 100 فیصدی غلط فیصلہ ہے، ہندوستان عوام کا ملک ہے، مذہب کا نہیں، اسے غلط قرار دیتے ہوئے وزیراعظم نریندر مودی سے اس بل کو واپس لینےکا مطالبہ کیا او رکہا کہ یہ ملک اورملک کی جمہوریت کیلئے ٹھیک نہیں ہے۔
اگر یہ قراردات پاس ہوتی ہے تو تلنگانہ چوتھی ریاست ہوگی، اس سے پہلے کیرالا، پنجاب اور راجستھان نے اس قانون کے خلاف اسمبلی میں قراردات پاس کیا- اب اس فہرست میں ایک اور ریاست کا نام جڑ گیا ہے۔

چند پہلے سپریم کورٹ نے اس پر روک لگانے سے انکار کردیا تھا، اور مرکز کو جواب دینے کے لئے چار ہفتوں کا وقت دیا گیا۔ انہوں نے میڈیا سے بات کرت ہوئے کہا کہ سی اے اے آئین کے مخالف ہے، اور ذاتی طور پر وزیر داخلہ امیت شاہ سے فون بات کرتے ہوئے راؤ نے اس بل کے خلاف ہونے کی بات کہی-انہوں نے بتایا کہ شہریت ترمیمی قانون میں مسلمانوں کو شامل نہ کرنے پرانھیں تکلیف پہنچی ہے۔

راؤ نے سی اے اے پر متعد چیف منسٹرس ے بات کی- میں نے 16 چیف منسٹرس اور کچھ علاقائی جماعتوں سے بات کی جو اقتدار میں نہیں ہے، وہ سب پریشان ہے، اور ایک ماہ کے اندر شہرحیدرآباد میں شہریت ترمیمی قانون کی مخالفت کرنے والے وزرائے اعلی اورعلاقائی جماعتوں کا اجلاس طلب کیا جائےگا۔

جب سے شہریت قانون کی مخالفت شروع ہوئی تب سے کے سی آر خاموشی بنائے ہوئے تھے۔ لیکن آج میونسپل انتخابات کے نتائج کے بعد انہیں نے اپنی خاموشی توڑی اور تلنگانہ عوام کی کچھ حد تک راحت کی سانس دلائی ہے۔  بتادیں شہر حیدرآباد میں اس قانون کو لیکر ملین مارچ، ترنگا ریلی، فلیش دھرنا اور کئی احتجاج ہوئے۔

Tags:

You Might also Like