Type to search

قومی

مودی جی سے کہنا چاہتا ہوں کہ اب آپ قسمت والے نہیں رہے: کپل سبل

دہلی،13جون(ذرائع) کانگریس نے پیٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں اضافہ کو لیکر ہفتہ کو الزام لگایا کہ حکومت لگاتار پیٹرولیم کی قیمت اضافہ کررہی ہے کیونکہ اسکے پاس ریوینو کا کوئی دوسرا ذریعہ نہیں ہے- پارٹی کے سینئر لیڈر کپل سبل نے یہ دعوی بھی کیا کہ کورونا بحران کے وقت بھی ہندوستان میں پیٹرول پر ٹیکس دنیا میں سب سے ذیادہ 69 فیصدی ہے اور حکومت عام لوگوں کو کوئی راحت نہیں دے رہی ہے- غور طلب ہے کہ پیٹرول کی قیمتوں میں ہفتہ کو 59 پیسے فی لیٹر اور ڈیزل کی قیمتوں میں 58 پیسے فی لیٹر کا اضافہ کیا گیا-

 

کپّل سبل نے ہفتہ کے روز یہاں پریس کانفرنس میں کہا کہ حکومت ایندھن کی فروخت سے بہت زیادہ منافع کما رہی ہے۔ اس منافع میں مسلسل اضافہ کرنے کے لیے ہر روز تیل کی قیمتوں میں اضافہ کیا جا رہا ہے۔

 

انہوں نے کہا کہ مئی 2014 میں دہلی میں پٹرول کی شرح 71 روپے 41 پیسے تھی، جبکہ 2014 میں عالمی مارکیٹ میں خام تیل کی قیمت 106 ڈالر فی بیرل تھی، جو آج فی بیرل 38 ڈالر ہے۔ مگر اس کے باوجود جو اس سال جون میں پٹرول کی قیمت 75 پیسے 16 پیسے فی لیٹر ہوگئی ہے یعنی پٹرول کی قیمت میں پانچ فیصد سے زیادہ کا اضافہ ہوا ہے۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ حکومت تیل سے کمائی کررہی ہے اور عام لوگوں کو لوٹا جارہا ہے۔ حکومت تیل سے ریکارڈ ٹیکس وصول کررہی ہے اور لوگوں کی جیبوں پر ڈاکہ ڈال رہی ہے۔

Tags:

You Might also Like