Type to search

ٹی وی اور فلم

جانی لیور برتھ اسپیشل : اپنی زبردست کامیڈی سے بالی ووڈ میں جگہ بنائی

جانی لیور

فلمی ڈسک،14اگسٹ (اردو پوسٹ انڈیا ڈاٹ کام) جانی لیور کا پورا نام جان پرکاش راؤ جنومالہ ہے۔ وہ آندھرا پردیش کے پرکاشم ضلع میں 14 اگست 1957 کو ایک تیلگو عیسائی گھرانے میں پیدا ہوئے۔  انکی مادری زبان تیلگو ہے۔ لیکن وہ ہندی ، مراٹھی ، انگریزی میں روانی رکھتے ہیں۔ وہ خاندان میں بڑے ہیں جس میں تین بہنیں اور دو بھائی ہے۔

ہندوستان لیور لمیٹڈ کمپنی کے ایک فنکشن کے دوران انہوں نے کچھ سینئر افسران کی نقل کی ، تو ورکس نے انہیں جان راؤ نہیں بلکہ جانی لیور کہا۔ جب فلم انڈسٹری میں گئے تو یہ نام رکھنے کا فیصلہ کیا۔ اس طرح انکا نام جانی لیور ہوگیا۔

جانی لیور بالی ووڈ کے ان مشہور کامیڈین میں سے ایک ہے جنکی موجودگی سے ہی فلم بلاک بسٹر بن جاتی ہے۔ اپنی شاندار اداکاری کے ذریعہ جانی لیور بالی ووڈ کے چارلی چیپلین بن چکے ہیں۔ 90 کے دہائی میں ایک وقت ایسا بھی تھا جب جانی لیور کے بنا ہر فلم کو ادھورا مانا جاتا تھا۔ اپنی زبردست کامیڈی سے جانی لیور ہر فلم کے سین میں جان ڈال دیتے تھے۔

جانی لیور نے ساتویں جماعت تک آندھرا ایجوکیشن سوسائٹی انگلش ہائی اسکول میں تعلیم لی، وہ اپنے خاندان میں مالی پریشانیوں کی وجہ سے مزید تعلیم حاصل نہیں کرسکے۔

جانی لیور بہت غریبی میں وقت گذارا ہے، بالی ووڈ میں انٹری کرنے سے پہلے جانی  ممبئی کی سڑکوں پر پین فروخت کرتے تھے۔ جسکے بعد بالی ووڈ اسٹار سنیل دت نے جانی لیور کو بالی ووڈ میں آنے کا موقع دیا۔

بتایا جاتا ہے کہ انہوں نے اپنے شروعاتی دن حیدرآباد کے یاقوت پورہ میں گذارے جہاں انہوں نے مزاجیہ اداکاری کا انوکھا اسٹائل سیکھا۔

جانی کی میمکری اور کامیڈی نے سنیل دت کا دل جیت لیا تھا۔

سنیل دت کی فلم درد کا رشتہ سے جانی نے اپنا فلمی سفر شروع کیا تھا۔

درد کا رشتہ کے بعد وہ جلوہ میں نصیر الدین شاہ کے ساتھ نظر آئے۔

لیکن انکی پہلی بڑی کامیابی بازیگر کے ساتھ شروع ہوئی۔

کامیڈین جانی نے سال 1984 میں سجاتا سے شادی کی تھی۔

سجاتا اور جانی کے دو بچے ہیں۔

جن میں بیٹی کا نام جیمی لیور اور ایک بیٹے کانام جسی ہے۔

بہترین مزاحیہ کردار کے لیے جانی کو 13 مرتبہ فلم فیئر میں نامزد ہوئے

اور دو بار یہ اعزاز حاصل کیا، انہیں یہ ایوارڈ سال 1997 میں آئی

فلم دیوانہ مستانہ اور سال 1998 میں آئی فلم دولہا راجا میں کی اداکاری پر دیا گیا۔

انہوں نے قریب تین سو سے زائد بالی ووڈ کی فلموں میں کام کیا ہے۔

اپنی میمیکری کے ذریعہ جانی لیور لاکھوں لوگوں کے چہرے پر مسکان لا چکے،

لیکن ایک ایسا وقت بھی آیا تھا ،

جب بالی ووڈ کے اس کامیڈین کے چہرے کی مسکان پوری طرح سے غائب ہوگئی تھی۔

اداکار جانی کا بیٹے جسی کینسر سے لڑائی لڑ چکا ہے۔

جسی کے گلے میں ایک ٹیومر تھا۔

علاج کے بعد بھی یہ ٹیومر بڑھتا چلا گیا اور کینسر میں تبدیل ہوگیا۔

جس وقت جانی کے بیٹے کو کینسر ہوا اس دوران وہ صرف 12ویں کلاس میں تھے۔

بیٹے کو کینسر ہونے کے بعد جانی بری طرح ٹوٹ گئے تھے۔

جانی نے ہمت نہیں ہاری اور اپنے بیٹے کے علاج میں کوئی کثر نہیں چھوڑی۔

ایسے میں جلد ہی جانی کے بیٹے نے کینسر کو شکست دی۔

Tags: