Type to search

بزنس

قدرتی آفات میں مواصلات کو مضبوط کرے گا جیو کا’ ایمرجنسی رسپانس کمیونیکیشن سسٹم

ایمرجنسی رسپانس کمیونیکیشن سسٹم

• ایمرجنسی میں کمیونیکیشن کیلئے جیو بنائے گا ڈیجیٹل ہائی وے پر الگ  کمیونیکیشن لین
• پش ٹو ٹاک، ڈرون سرویلنس، ریئل ٹائم ویڈیو اسٹریمنگ جیسی سہولیات ہوں گی
• ایمرجنسی رسپانس کمیونیکیشن سسٹم کو بڑی صنعتوں اور این ڈی آر ایف کی ضروریات کو مدنظر رکھتے ہوئے ڈیزائن کیا گیا ہے


نئی دہلی، 28 اکتوبر  2023 (پریس نوٹ) سیلاب، آگ اور زلزلے جیسی قدرتی آفات سے نمٹنے میں حکومتوں اور انتظامیہ کو سب سے بڑا چیلنج  کا سامناکرناپڑتا ہے، وہ ہے مواصلات کا نام ہوجانا، جس کی وجہ سے ضروری اور بروقت امداد فراہم کرنا مشکل ہوجاتا ہے۔ ریلائنس جیو نے انڈیا موبائل کانگریس-2023 میں اپنا ‘ ایمرجنسی رسپانس کمیونیکیشن سسٹم’ ڈسپلے کیا ہے، جس سے بیش قیمت  زندگیوں کو بچایا جاسکے گا۔

جیو کے  ٹرو 5جی پر چلنے والا یہ ‘ ایمرجنسی رسپانس کمیونیکیشن سسٹم’ کئی سطحوں پر مواصلات کو مضبوط کرے گا۔ اس سسٹم میں سیٹلائٹ سے منسلک ‘ کمیونیکیشن ٹاور آن وہیلز’ ہوگا، جسے کسی بھی وقت، کہیں بھی اور کسی بھی صورت حال میں مقامی مواصلاتی نظام میں خلل پڑنے کی صورت میں تعینات کیا جا سکتا ہے۔
امداد پہنچانے والیٹیموں کے کمانڈ سینٹر کے لیے، ریلائنس جیو نے ایک طاقتور ایپ ڈیزائن کی ہے جسے ‘ ایکس آر

 

 

 کمپینین کہا جاتا ہے۔ یہ ایپ آپ کو حقیقی وقت میں اپنی سپورٹ ٹیموں سے منسلک رکھے گی۔ کام کی تقسیم، دو طرفہ آڈیو ویڈیو کالنگ، ایمرجنسی ایمبولینس کالنگ، ٹیم کی نقل و حرکت، کام کی پیش رفت کی رپورٹ کو کمانڈ سینٹر میں موجود ایپ کے ذریعے حقیقی وقت پر مانیٹر کیا جا سکتا ہے۔ فی الحال اس ایپ میں تقریباً 20 ٹیموں کو بیک وقت منسلک کیا جا سکتا ہے۔ جس میں ضرورت پڑنے پر اضافہ بھی کیا جا سکتا ہے۔

 

 

این ڈی آر ایف یا دور بیٹھے امدادی افسران 5 جی سے منسلک ڈرون کے ذریعے ناقابل رسائی جگہوں پر ہونے والے نقصان کا جائزہ لے سکیں گے۔ اس کے علاوہ، امدادی کارکن ایک دوسرے کے ساتھ بات چیت کے لیے وائس ایکٹیویٹڈ 5جی سے منسلک آلات استعمال کریں گے۔ یہ 5جی ڈیوائسز جو ہیلمٹ پر لگائی گئی ہیں ان میں کیمرہ، فلیش لائٹ اور لیزر بیم جیسی خصوصیات ہیں۔ تاکہ جلد از جلد مدد فراہم کی جا سکے۔

کسی آفت کے دوران، جیو ڈیجیٹل کمیونیکیشن ہائی وے پر نیٹ ورک سلائسنگ کے ذریعے ایک وقف اور انتہائی محفوظ مواصلاتی لین بنائے گا۔ تاکہ تباہی سے متعلق اہم مواصلاتی ضروریات کو بغیر کسی رکاوٹ کے پورا کیا جا سکے۔ پش ٹو ٹاک، ڈرون سرویلنس، ریئل ٹائم ویڈیو اسٹریمنگ، ہائی بینڈ وڈتھ ایپلی کیشنز جیسی خصوصیات بہتر ہم آہنگی اور فیصلہ سازی میں مدد کریں گی۔

اس ہنگامی نظام کو ‘ نیشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی’ (این ڈی آر ایف) کو تیز رفتار رابطہ فراہم کرنے کے مقصد سے ڈیزائن کیا گیا ہے، جو کہ آفت زدہ علاقے میں سب سے پہلے داخل ہوا تھا۔ یہ نظام بڑی صنعتوں میں پیش آنے والے حادثات میں بھی کارآمد ثابت ہو سکتا ہے۔  جیو نے  ایس ای ایس کے ساتھ شراکت میں یہ ایمرجنسی رسپانس کمیونیکیشن سسٹم بنایا ہے۔ آفت کتنی بھی خوفناک کیوں نہ ہو،  جیو کا یہ ایمرجنسی سسٹم کام کرتا رہے گا۔

 

 

قدرتی آفات کو مکمل طور پر روکا نہیں جا سکتا لیکن اس سے ہونے والے نقصانات کو ضرور کم کیا جا سکتا ہے۔ کسی آفت میں وقت پر مدد کے لیے رابطہ ضروری ہے اور یہ بہت ضروری ہے کہ بات چیت کا کام جاری رہے۔  جیو کے ‘ ایمرجنسی رسپانس کمیونیکیشن سسٹم’ کو کسی آفت میں مضبوط مواصلات کے لیے ناقابل تسخیر حل مانا جارہا ہے۔

Tags:
Ayub Khan

Ayub Khan, MA (MCJ) MANUU, Managing Editor of Urdu Post, CEO of MAKS Media.

  • 1

You Might also Like