Type to search

قومی

جگن موہن ریڈی نے کہا ہم این آر سی کی مخالفت کریں گے

حیدرآباد،24ڈسمبر(اردو پوسٹ انڈیا ڈاٹ کام) این آر سی کو لیکر ملک بھر میں مخالف مظاہرے جاری ہے۔ اسے لیکر کئی سیاسی پارٹیاں اب اس بلند آواز سے سے اپنی بات رکھ رہے ہیں۔ اس فہرست میں اب ایک اور نام جڑ گیا ہے۔ یہ نام ہے جگن موہن ریڈی کا۔ آندھراپردیش کے وزیراعلی وائی ایس جگن موہن ریڈی نے پیر کو کہا کہ انکی حکومت نیشنل رجسٹر آف سیٹیزن (این آر سی) کی مخالفت کرتی ہے اور اسے ریاست میں لاگو نہیں کرے گی۔ کڑپہ میں ترقیاتی کاموں کا افتتاح کرنے کے بعد عوام سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعلی نے کہا کہ انکی حکومت این آر سی کے خلاف ہے۔ سی ایم ریڈی نے کہا کہ پیر کو میرے یہاں پہچنے کے بعد، میناریٹی کمیونٹی کے کئی افراد نے مجھ سے ملاقات کی اور گذارش کی کہ میں این آر سی پر بیان دو، میں نے انہیں صاف صاف کہہ دیا کہ ریاست اسکی حمایت نہیں کرے گی۔

انہوں نے کہا کہ ڈپٹی چیف منسٹر امجد باشاہ نےکچھ دن پہلے اس مسئلہ پر ایک بیان دیا تھا۔ جگن نے اقلیتیوں کو کہا کہ ہم این آر سی کے خلاف ہے اور اسکو حمایت کرنے کا سوال ہی نہیں ہے۔ بتادیں کہ جگن ریڈی نے کچھ وقت پہلے ہی این آر سی کو لیکر پرشانت کشور سےملاقات کی۔ پرشانت سے بات کے بعد ہی انہوں نے اسکے خلاف جانے کا فیصلہ کیا ہے۔
بتادیں کہ شہریت قانون کو لیکر ملک بھر میں مظاہرے ہورہے ہیں۔ رکن پارلیمنٹ نتیش کمار کی پارٹی جنتا دل (جے ڈی یو) نے اس بل کی حمای کی تھی، حالانکہ جے ڈی یو کے قومی نائب صدر پرشانت کشور اس کی مخالفت کرتے رہے ہیں۔ اب نیشنل رجسٹر آف سیٹیزن آف انڈیا (این آر سی) کے مسئلہ پر بھی کشور نے اپنی بات رکھی ہے۔

Tags:

You Might also Like