Type to search

تعلیم اور ملازمت

جادھو پور یونیورسٹی گولڈ میڈلسٹ نے سی اے اے کے خلاف اپنی ڈگری پھاڑی، ہم کاغذ نہیں دیکھائیں گے

جادھو پور یونیورسٹی کے کانووکیشن تقریب میں طالب علم نے شہریت قانون کے خلاف اپنی ڈگری پھاڑ دی


مغربی بنگال،25ڈسمبر(اردو پوسٹ انڈیا ڈاٹ کام) مغربی بنگال کی جادھو پور یونیورسٹی کے کانووکیشن تقریب میں منگل کو ایم اے کی ڈگری لینے کے بعد شہریت قانون کے خلاف ایک طالب علم نے اپنی ڈگری پھاڑ دی۔ انٹرنیشنل ریلیشن کی طالب علم دیبسمیتا چودھری نے کہا کہ یہ میری مخالفت کرنے کا طریقہ ہے۔ طالب علم کا کہنا ہے کہ اس نے ایسا اس لیے کیا کیونکہ شہریت قانون (سی اے اے) ملک کے سچے شہری کو اپنی شہریت ثابت کرنے کے لیے پابند کرتا ہے۔

سی اے اے کے لیے ڈگری پھاڑنے کے دوران چانسلر اور جسٹرار بھی موجود تھے۔ طالب علم نے کہا کہ ہم کاغذ نہیں دیکھائیں گے۔ انقلاب زندہ باد۔ انہوں نے کہا کہ سی اے اے کے لیے ڈگری پھاڑ کر میں یونیورسٹی کی توہین نہیں کررہی ہوں۔ اپنی پسندیدہ انسٹی ٹیوٹ سے ڈگری لیکر میں بے حد فخر محسوس کررہی ہوں۔

طالب علم نے کہا کہ میں نے سی اے اے کے خلاف اپنی مخالفت درج کرانے کے لیے ایسا کیا ہے۔ ایک طالب علم اے داس نے بتایا کہ انکے بیچ کے قریب 25 طلباء نے اپنی ڈگری لینے کے لیے اسٹیج پر نہیں گئے۔

طالب علموں نے گورنر کو کالے جھنڈے دیکھائے
اس سے پہلے منگل کو جادھو پور یونیورسٹی میں مغربی بنگال کے گورنر جگدیپ دھنکڑ کے قافلے کا گھیراؤ کیا گیا اور انہیں کالے جھنڈے دیکھائے گئے۔ گورنر منگل کی صبح تقریب میں شامل ہونے کے لیے یونیورسٹی پہنچے تھے۔ لیکن طلبہ نے انہیں جانے نہیں دیا۔
طلباء نے گورنر کے خلاف جم کر نعرے بازی کی اور کالے جھنڈے دیکھائے۔ طلباء نے الزام لگایا کہ گورنر بی جے پی قائدین کی طرح سی اے اے کی حمایت کررہے ہیں۔

Tags: