Type to search

صحت

روزانہ 30 منٹ کی واک رکھی گی آپ کو صحتمند  اور میڈیٹیشن دل کو رکھے گا درست

Yoga is a group of physical

ہیلتھ ڈسک،(اردو پوسٹ انڈیا ڈاٹ کام) دل کو درست رکھنےکے لیے یوگا اور میڈیٹیشن کا رول اہم ہے۔ یوگا سے کس طرح دل کی بیماری کو دور رکھ سکتے ہیں۔ بتارہی ہے پرینکا سنگھ۔۔۔

فورٹیس ایسکارٹس ہارٹ انسٹی ٹیوٹ کے چیئرمین ڈاکٹر اشوک سیٹھ کے مطابق دل کو فٹ رکھنے اور بیماری سے بچنے کے لیے روزآنہ کم سے کم 30 منٹ یا ہفتے میں 5 پانچ 45 منٹ کارڈیو ورزش کرنا ضروری ہے۔ اس سے وزن اور بلڈ پریشر، دونوں کم ہوتا ہے۔ کارڈیو ورزش میں تیز چہل قدمی ، ٹہلنا ، سائیکلنگ ، تیراکی ، رقص ، زومبہ وغیرہ شامل ہیں۔

اسکا سیدھا سا فارمولا یہ ہے کہ واک یا دوسری ورزش کی اسپیڈ اتنی تیز ہو کہ اس دوران ہارٹ بیٹ تک جانی چاہیئے ۔ پیک ہارٹ ریٹ نکالنے کا فارمولا ہے 220۔ عمر = جواب کا 75 فیصدی ۔ اگر عمر 40 سال ہے تو پیک ہارٹ ریٹ ہوگا 220-40(سال) = 180 کا 75 فیصدی یعنی 135 تک ۔ موٹے طور پر اسے یوں بھی کہے سکتے ہیں کہ 45 منٹ میں 6-5 کلومیٹر چلنے کی کوشش کرنی چاہیئے۔ کارڈیو کے علاوہ یوگاسنا، پرنایاما اور میڈیٹیشن بھی دل کو صحت مند رکھنے میں مدد کرتے ہیں۔

آسن

یوگا گرو یوگی امرتراج کے مطابق تڑاسنا ،اتناپداسن، کٹیچکراسن، دھنوراسن ، نوکاسن ، پونمکتاسن ، اردھا-ہلسن اور بلیوا آسن (بلی والا پوسچر) دل کے لیے خاص طور پر فائدے مند ہے۔ ان سبھی کے قریب 5-3 راؤنڈ کرلیں اور ہر راؤنڈ میں فائنل پوسچر پر پہچنے کے بعد 15-10 سکنڈ یا 5-3 سانس تک روکیں۔ پھر واپس آئے۔

روزآنہ 50-45 منٹ واک کریں، ایک بار میں نہیں کرسکتے تو 15-15 منٹ کے لیے تین بار میں کریں، سائیکلنگ اور سوئمنگ کرنا بھی فائدے مند ہے۔

جاگینگ ، ایروبکس یا ہیوئی ورزش سے پہلے ڈاکٹر سے صلاح لے لیں، کیونکہ اس سے بلڈ پریشر بڑھ سکتا ہے۔

میڈیٹیشن

میڈیٹیشن 15-10 منٹ کریں، سب سے آسان میڈیٹیشن ہے۔ آرام سےبیٹھ کر سانس پر فوکس کریں، میڈیٹیشن سے ذہن پرسکون ہونے کے ساتھ ساتھ توجہ بھی بڑھتی ہے۔

Tags:

You Might also Like