Type to search

صحت

کوئی نہیں جانتا کیوں آتی ہے ہچکی؟

ہچکی

ہیلتھ ڈسک، (اردوپوسٹ انڈیا ڈاٹ کام) آپ نے بھی اکثر دادی  ۔ نانی کو یہ کہتے سنا ہوگا کہ ہچکی آرہی ہے، اسکا مطلب کوئی آپ کو یاد کررہا ہے۔ کوئی کہتا ہے کہ جلدی کھنا کھانے کے چک رمیں جب آپ کھانے کو ٹھیک سے چبا کر نہیں کھاتے تو ہچکیاں شروع ہوجاتی ہے۔ کوئی کہتا ہے کہ ہچکی آرہی ہے تو پانی پی لیں، ہچکی روک جائیں گی۔ لیکن آخر کار یہ ہچکیاں آتی کیوں ہے۔ اس سوال کا جواب سائسندان کے پاس بھی نہیں ہے۔

اس کی وجہ ہاسپٹل میں شریک ہوتے ہیں سے 4 ہزار لوگ

 زیادہ تر ہچکیاں بے حد مہربان ہوتی ہے جو صرف چند منٹ میں یا گھنٹوں کے لیے ہی رہتی ہے۔ لیکن کئی بار ہچکیاں کسی سنیگن بیماری کا بھی اشارہ دیتی ہے۔ خاص کر تب جب یہ بند ہونے کا نام نہی نہ لیں اور یہ کئی دنوں ، مہینوں یا سالوں تک آتی رہے، ہچکیاں آنا کچھ لوگوں کے لیے شرمندگی سے بھرا ہوسکتا ہے۔

اتنا ہی نہیں ہچکی کی وجہ سے کھانا کھانے میں دقت ہوتی ہے۔ نیند میں روکاوٹ آتی ہے۔ ہر سال امریکہ میں 4 ہزار لوگوں کو ہچکیوں کی وجہ سے ہاسپٹل میں شریک ہونا پڑتا ہے۔ گینز ورلڈ ریکارڈس میں چارلس آسبورن کا نام سب سے لمبی ہچکی لینے کے لیے درج ہے۔

انہوں نے 68 سال تک لگاتار ہچکی لی تھی

ڈاکٹروں کی مانیں تو ہچکی آنے کی اتنی ہی وجہوں جتنی اس روکنے کی طریقے اور نسخے، اس میں کوئی شک نہیں کہ ہچکیاں ہر کسی کو آتی ہے اور کبھی بھی آسکتی ہے لیکن کیوں آتی ہے اسکا عین وہج اب تک پتہ نہیں چل سکی۔ حالانکہ سائسندانوں کی مانیں تو ہچکی ہمارے جسم میں موجود ڈایافرام کے سکڑنے سے آتی ہے۔ ڈایا فرام ایک پٹھا ہے جو چیسٹ کیویٹی کا پیٹ کیویٹی سے الگ کرتی ہے۔

Tags: