Type to search

صحت

گلابی امرود کے فائدے : وٹامن سی، فائبر اور اومیگا 3 کا خزانہ

گلابی امردو

غذائیت سے بھرپور امرود (جام)

معدے کے لیے بہت فائدہ مند پھل ہے۔

قوت مدافعت بڑھانے میں مدد کرتا ہے-


ہیلتھ ڈسک، (اردو پوسٹ انڈیا ڈاٹ کام) پھلوں کے استعمال سے صحت کو کئی فائدے ہوتے ہیں- ان میں وہ تمام ضروری غذائی اجزاء پائے جاتے ہیں جو جسم کو بہتر کام کے لیے چاہیئے- ہر پھل کے اپنے الگ الگ فائدے ہیں- انہیں میں سے ایک امرود ہے- قدرت کے انمول تحفوں میں سے ایک مرود بھی ہے۔

 

 

 

سنترے کے مقابلے میں چار گنا زیادہ وٹامن سی ہوتا ہے۔ اس سے کھانسی ، زکام جیسے چھوٹے ۔ موٹے انفکشنس سے بچاؤ رہتا ہے۔ اس سے قوت مدافعت میں بھی اضافہ ہوتا ہے اور بیماریوں سے لڑنے میں مدد ملتی ہے۔

آسانی سے دستیاب ہونے والا یہ پھل سبھی غذائی اجزاء کا خزانہ ہے۔ اپنے منفرد ذائقے اور خوشبو کے علاوہ امرود کو اپنے متعدد صحت کے فوائد کی وجہ سے سپر پھلوں میں شمار کیا جاتا ہے۔

امرود ایک ایسا پھل ہے جو نہ صرف سستا ہے بلکہ ہر کسی کا پسندیدہ پھل بھی ہے۔ امرود کی بہت سی قسمیں ہیں، کچھ اندر سے سفید، کچھ بہت گلابی ہوتی ہیں۔ امرود ذائقے میں کھٹا میٹھا ہوتا ہے اور یہ معدے کے لیے بہت فائدہ مند پھل ہے۔

 

 

 

 

 

امرود (جام) میں کچھ ایسے غذائی اجزاء موجود ہوتے ہیں، جو آپ کو کئی بیماریوں سے دور رکھتے ہیں۔ ماہرین بھی ہمیشہ موسمی پھلوں کو خوراک میں شامل کرنے کے لیے کہتے ہیں۔

کچھ لوگ امرود کی اقسام کے بارے میں الجھن میں رہتے ہیں۔ ان کی سمجھ میں نہیں آتا کہ سفید والا امردو کھانا ذیادہ فائدے مند ہے یا گلابی؟

حقیقت میں امرود غذائی اجزاء کا پاور ہاؤس ہے۔ یہ پھل وٹامن سی، لائکوپین اور اینٹی آکسیڈنٹس سے بھرا ہوتا ہے، جو جلد کے لیے فائدہ مند ہوتے ہیں۔ یہ مینگنیج سے بھی بھرپور ہوتا ہے جو جسم کو آپ کے کھائے جانے والے غذائی اجزاء کو جذب کرنے میں مدد کرتا ہے۔ اس میں فولیٹ بھی پایا جاتا ہے، جوکہ ایک منرل ہے، جو زرخیزی کو فروغ دینے میں مدد کرتا ہے-

امرود دو طرح کے ہوتے ہیں سفید اور گلابی- سوال یہ ہے کہ ان میں سے کس طرح امرود ذیادہ فائدے مند ہے-

ریاستہائے متحدہ کے محکمہ زراعت (یو ایس ڈی اے) کے اعداد و شمار کے مطابق، 100 گرام پھل میں صرف 68 کیلوریز اور 8.92 گرام چینی ہوتی ہے۔ امرود کیلشیم سے بھی بھرپور ہوتے ہیں کیونکہ ان میں فی 100 گرام پھل میں 18 گرام منرل ہوتا ہے۔ اس میں 22 گرام میگنیشیم فی 100 گرام پھل ، ساتھ ہی فاسفورس اور پوٹاشیم کی نمایاں مقدار 40 اور 417 گرام فی 100 گرام، شامل ہے-

 

 

 

 

 

امرود کھانے کے فائدے
جلد کے لئے اچھا-
وزن میں کمی کے لئے اچھا ہے-
قوت مدافعت بڑھانے میں مدد کرتا ہے-
امرود میں کینسر خلاف خصوصیات ہیں-
نظام انہضام کے لیے بہت اچھا ہے-
دل کی صحت کو فروغ دینے میں مددگار-
بلڈ شوگر کی سطح کو کم کرنے میں مدد کرتا ہے-
حیض کی دردناک علامات کو دور کرنے میں مدد کرسکتا ہے-

امرود اینٹی مائیکروبیل، اینٹی فنگل، وٹامن سی، کے، بی 6، فولیٹ، نیاسین، اینٹی ذیابیطس، اینٹی ڈائریا، آئرن، فاسفورس، کیلشیم، پوٹاشیم، زنک، کاپر، کاربوہائیڈریٹ، غذائی ریشہ وغیرہ جیسے غذائی اجزاء سے بھرپور ہے۔ یہ پیٹ سے متعلق مسائل سے بچاتا ہے۔

امرود کھانے سے قبض جیسے مسائل پیدا نہیں ہوتے۔ غذائی ریشہ ہونے کی وجہ سے یہ بلڈ شوگر لیول کو کنٹرول کرتا ہے۔ ایسی حالت میں شوگر کے مریض امرود کا استعمال ضرور کریں۔

 

 

 

 

غذائی اجزاء کا خزانہ ہے گلابی امرود
گلابی امرود وٹامن اے اور سی کے ساتھ ساتھ اومیگا 3 اور اومیگا 6 پولی انسیچوریٹیڈ فیٹی ایسڈ اور فائبر میں زیادہ ہوتے ہیں- یہ فائبر میں بھی زیادہ ہے اور ذیابطیس مریضوں کے لیے فائدے مند ہیں-

کیروٹینائڈز کا خزانہ ہے گلابی امرود
گلابی امرود میں کیروٹینائڈز نامی نامیاتی روغن کا قدرتی طور سے پایا جانے والا مربع ہوتا ہے، جو گاجر اور ٹامٹر کو انکا الگ لال رنگ دیتا ہے-

کیروٹینائڈز بیس پر امردو کا رنگ بھی ہلکا گلابی ہوتا ہے، دوسری اور سفید امردو کی کیروٹینائڈز مواد کم ہوتی ہے، اسکے علاوہ سفید اور گلابی امردو اپنے ذائقے میں تھوڑا مختلف ہوتے ہیں-

 

 

 

 

گلابی یا سفید کون سا امردو ذیادہ فائدے مند؟
گلابی امردو میں پانی کی مقدار زیادہ ہوتی ہے۔ اس میں چینی، نشاستہ اور وٹامن سی کی مقدار کم ہوتی ہے۔ اس میں بیج بھی کم ہوتے ہیں۔

سفید امرود میں چینی، نشاستہ، وٹامن سی اور بیج زیادہ ہوتے ہیں۔ سفید امرود میں اینٹی آکسیڈنٹ کی مقدار زیادہ ہوتی ہے، لیکن لال والی قسم میں اور بھی زیادہ ہوتا ہے۔

 

 

 

 

امرود کھانے کا طریقہ
آپ امرود کو کاٹ کر اس پر نمک لگا کر کھا سکتے ہیں۔ پھلوں سے تیار کردہ سلاد میں بھی اسے ڈال سکتے ہیں-

ساتھ ہی امردو کا جوس، بناکر پی سکتے ہیں- ایمونٹی کو بوسٹ کرکے آپکو کئی بیماریوں سے بچائے رکھ سکتا ہے-

Tags:

You Might also Like