Type to search

تلنگانہ

گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن انتخابات یکم دسمبر کو

حیدرآباد،17 نومبر(اردو پوسٹ انڈیا ڈاٹ کام) گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن (جی ایچ ایم سی) کے انتخابات اگلے مہینے کی پہلی تاریخ یعنی کہ یکم ڈسمبر کو ہونگے۔ ریاستی الیکشن کمیشن آفیسر پرتھاسارتھی نے یہ اعلان منگل کے روز کیا۔

انہوں نے کہا کہ سال 2016 کی ریزورویشن پالیسی جاری رہے گی۔ اسمبلی ووٹنگ فہرست کے مطابق ہی ووٹنگ ہوگی۔ سفید رنگ کا بیلٹ پیپر ووٹنگ کے لیے استعمال کیا جائے گا۔ اس بار میئر عہدے کے لیے عام خواتین کے لیے مخصوص ہے۔

الیکشن آفیسر نے مزید بتایا کہ 18 نومبر سے کاغذات نامزدگی جمع کروائے جائیں گے۔ 20 نومبر کو کاغذات نامزدگی جمع کروانے کی آخری تاریخ ہے۔ کاغذات نامزدگی 21 کو جانچ کیے جائیں گے۔ 22 نومبر کو ہی شام کو امیدواروں کی فہرست اعلان کی جائے گی۔ یکم ڈسمبر کو ووٹنگ ہوگی۔ ضرورت پڑنے پر 3 ڈسمبر کو دوبارہ ووٹنگ ہوگی۔ 4 ڈسمبر کو ووٹوں کی گنتی ہوگی اور 3 بجے تک نتائج اعلان کیے جائیں گے۔ صبح 7 بجے سے 6 بجے شام تک ووٹنگ ہوگی۔

انہوں نے یہ بھی بتایا کہ امیدوار کو 5 لاکھ روپے خرچ کرنے کی اجازت دی گئی ہے۔ کل 2700 پولنگ اسٹیشن مرکز ہے۔ جی ایچ ایم سی میں 74،04،286 لاکھ ووٹرز ہیں۔

بتادیں کہ ملاردیوپلی میں سب سے زیادہ ووٹرس 79،290 ہیں۔ جبکہ رامچندراپورم میں سب سے کم 27،997 ووٹرز ہیں۔

الیکشن آفیسر نے بتایا کہ 1 جنوری 2020 تک 18 سال کی عمر پوری کرلی ہے وہ ووٹ دے سکتے ہیں۔ جی ایچ ایم سی میں 52.09 فیصد مرد اور 47.90 فیصد خواتین ووٹرز ہیں۔

انہوں نے کہا کہ انتخابی عمل 6 دسمبر تک پورا ہو جائے گا۔ انتخابی عمل کل 14 دنوں میں پورا ہوگا۔ جی ایچ ایم سی قانون کے مطابق ہی 150 وارڈ کے لیے انتخاب ہونگے۔ ایس سی، ایس ٹی اور امیدواروں کے لیے 2500 روپے دیگر کو 5000 روپے نامزدگی فیس جمع کرنا ہوگا۔

پرتھاسارتھی نے بتایا کہ جی ایچ ایم سی ووٹنگ کے لیے 48 ہزار ملازمین کو مقرر کیا گیا ہے۔ اسی سلسلہ میں 1439 عام پولنگ مراکز ہیں۔ اسکے علاوہ 1004 حساس اور 257 زیادہ حساس مراکز ہیں۔ انہوں نے یہ بھی بتایا کہ ایس ٹی کو 2 وارڈ، ایس سی کو 10 وارڈ، بی سی کو 50 وارڈ، جنرل کو 44 وارڈ دیگر جنرل کو 44 وارڈ ہیں۔

Tags:

You Might also Like