Type to search

قومی

کانگریس صدر راہول گاندھی نے اپنے عہدے سے دیااستعفی، کڑے فیصلے لینے پڑتے ہیں : راہل

نئی دہلی/3جولائی (اردو پوسٹ) کانگریس صدر راہل گاندھی نے اپنے عہدے سے استعفی دے دیا ہے۔ انہوں نے ایک اپنے لیٹر بھی جاری کیا ہے۔ اس اوپن لیٹر میں راہل گاندھی نے لکھا، کانگریس پارٹی کے لیے کام کرنا میرے لیے اعزاز کی بات تھی۔ انہوں نے خط میں 2019 کے لوک سبھا انتخابات میں پارٹی کو ملی شکست کا ذکر کرتے ہوئے لکھا، صدر کے ناطے ہار کے لیے میں ذمہ دارنہیں ہوں۔ اس لیے صدر عہدے سے استعفی دے رہا ہوں۔ انہوں نے آگے لکھا، پارٹی کو جہاں بھی میری ضرورت پڑے گی میں موجود رہوں گا۔

بتادیں کہ چہارشنبہ کو راہل گاندھی نے کہا کہ ایک مہینے پہلے ہی نئے صدر کا انتخاب ہوجانا چاہیے تھا۔ راہل گاندھی نے کہا، بنا دیر کیے ہوئے نئے صدر کاانتخاب جلد ہو، میں اس عمل میں کہیں نہیں ہوں۔ میں نے پہلے ہی اپنااستعفی سونپ دیا ہے اور میں اب پارٹی صدر نہیں ہوں۔ سی ڈبلیو سی کو جلد سے جلد میٹنگ بلاکر فیصلہ کرنا چاہیے۔

وہیں کانگری سسے جوڑے ذرائع نے بتایا کہ پارٹی کے نئے صدر کا فصیلہ ایک ہفتہ میں ہو جائے گا۔ بتادیں کہ لوک سبھا انتخابات میں کانگریس کے خراب مظاہرے کے بعد ہوئی کانگریس ورکنگ کمیٹی کی میٹنگ میں راہل گاندھی نے اپنے استعفی کی پیشکش کی تھی۔ اسکے بعد سے کانگریس رہنما انہیں استعفی واپس لینے کے لیے مناتے رہے ہیں۔ لیکن راہل ہمیشہ کہتے رہے یہں کہ وہ اپنا من نہیں بدلیں گے۔ غور طلب ہے کہ کانگریس حکومت والے ریاستوں کے وزیراعلی نے پیر کو ہی پارٹی صدر راہل گاندھی کے صدر کے طور پر بنے رہنے کے لیے درخواست کی تھی۔ میٹنگ کے بعد راجستھان کے وزیراعلی اشوک گہلوت نے میڈیا سے بات چیت میں کہا تھا کہ ہم نے راہل جی سے درخواست کی ہے کہ صدر عہدے پر بنے رہے۔

Tags: