Type to search

قومی

سابق صدر پرنب مکھرجی کا 84 سال کی عمر میں انتقال

پرنب مکھرجی کا انتقال

نئی دہلی،31 اگسٹ (اردو پوسٹ انڈیا ڈاٹ کام) ملک کے سابق صدر پرنب مکھرجی کی کا 84 سال کی عمر میں انتقال ہوگیا- چند منٹ پہلے پرنب مکھرجی کے بیٹے ابھیجیت مکھرجی نے ٹیوٹر پر اس کی معلومات دی-

مسٹر مکھرجی کے پھیپھڑوں کے انفیکشن کی وجہ سے حالت خراب ہوگئی تھی- انہیں وینٹیلیٹر پر رکھا گیا اور ماہر ڈاکٹروں کی ٹیم ان پر نظر رکھے ہوئے تھے- بتادیں کہ سابق صدر کورونا وائرس انفیکشن سے بھی متاثر تھے۔ اسکی معلومات انہوں نے ٹیوٹ کے ذریعہ 10 اگسٹ یعنی پیر کو دی تھی۔

سابق صدر پرنب مکھرجی کے بیٹے ابھیجیت مکھرجی نے ٹویٹ کیا ، “بھاری من کے ساتھ ، آپ کو یہ اطلاع دینا ہے کہ والد پرنب مکھرجی کا ابھی آر آر ہاسپٹل کے ڈاکٹروں کے لوششوں جور پورے ہندوستان میں لوگوں سے ملی دعاوں کے باوجود انکا انتقال ہوگیا ہے- میں آپ سبھی کو شکریہ ادا کرتا ہوں-

آرمی ہاسپٹل نے بیان میں کہا تھا، برین کلوٹ کے لیے 10 اگسٹ 2020 کو سابق صدر کی ایمرجنسی سرجری کی گئی۔ انکی حالت میں کوئی سدھار نہیں دیکھ رہا ہے۔ انکی صحت اور خراب ہوگئی ہے۔ وہ اب بھی وینٹیلیٹر پر ہے۔
دراصل پرنب مکھرجی کے دماغ میں ایک کلوٹ تھا، جسے نکالنے کے لیے انکا آپریشن کیا گیا ہے۔ بتادیں کہ پرنب مکھرجی کورونا وائرس سے بھی متاثر پائے گئے ہیں۔ 84 سالہ پرنب مکھرجی دہلی میں آرمی ہاسپٹل ریسرچ اینڈ ریفرل میں شریک ہے۔

سال 2012 سے 2017 تک ملک کے صدر رہے پرنب مکھرجی نے سرجری سے پہلے پیر کو ٹیوٹ کیا۔ انہوں نے پچھلے ایک ہفتہ میں اپنے رابطے میں آئے لوگوں سے خود کو آئیسولیٹ کرنے اور کورونا ٹیسٹ کرانے کی درخواست کی تھی۔

پرنب کمار مکھرجی کی پیدائش 11 دسمبر 1935 کو مغربی بنگال میں ہوئی۔ مکھرجی کی پیدائش مغربی بنگال کے ویربھوم ضلع کے کرناہر شہر کے قریب واقع میراتی گاؤں کے ایک برہمن خاندان میں کامدا کنکر مکھرجی اور راج لکشمی مکھرجی کے یہاں ہوئی تھی۔ انکی تعلیم ویربھوم کے سوری ودیاساگر کالج سے ہوئی۔  پرنب نے سروا مکھرجی سے 13 جولائی 1957 میں شادی کی۔ انکے دو بیٹے اور ایک بیٹی ہے۔

ہندوستان کے تیرہویں صدر رہے ہیں۔ پرنب مکھرجی کو 26 جنوری 2019 کو بھارت رتن سے نوازا گیا ہے۔ وہ انڈین نیشنل کانگریس کے سینئر رہنما رہ چکے ہیں۔ براہ راست مقابلہ میں، انہوں نے اپنے حریف امیدوار پی.اے سنگما کو شکست دی۔ انہوں نے 25 جولائی 2012 کو ہندوستان کے تیرہویں صدر کی حیثیت سے اپنے عہدے اور رازداری کا حلف لیا۔ پرنب مکھرجی نے کتاب “دی کولیشن ایئرز: 1996-2012” لکھی ہے۔

پرنب پہلی بار سال 1969 میں راجیہ سبھا کے لیے منتخب ہوئے۔ سال 2004 میں وہ پہلی بار مغربی بنگال کے جنگی پور پارلیمانی حلقہ سے منتخب ہوئے۔ اور سال 2009 میں وہ لوک سبھا پہنچے۔ وہ سال 1991 میں وزیر خارجہ بنے، منموہن حکومت میں وزیر دفاع، خزانہ، خارجہ کے عہدے سنبھالے۔