Type to search

وائرل

حجاب اور چہرے پر نقاب پہن کر ریسلنگ کرتی ہے یہ خاتون، ایسے کرتی ہے رنگ میں پٹائی

ملائیشیا،29جولائی(اردوپوسٹ) ملایشیا میں پرو۔ریسلنگ کافی مشہور ہے۔ لوگ اسے کافی پسند کیا کرتے ہیں۔ پرو۔ریسلنگ میں ایک خاتون ریسلر بحث میں ہے۔ کیونکہ وہ حجاب پہن کر فائٹ کرتی ہے۔ انکا نام ہے ’نور فیئنکس ڈیانا’ وہ ملائیشیا پرو۔ریسلنگ میں پہلی خاتون ہے جنہوں نے مرد ریسلر سے فائٹ کی ہے۔ 19 سالہ ڈیانا پہلی حجابی خاتون ہے جو مرد اور خاتون دونوں کےساتھ فائٹ کرتی ہے۔
جیسے ہی ڈیانا ، کالے حجاب اور ٹاپ کے ساتھ رنگ میں اترتی ہے تو لوگ انہیں کافی خوش کرتے ہیں۔ وہ اب تک کوئی خواتین کو ہراچکی ہے۔ یہاں تک کہ وہ مرد وں کو بھی دھول چٹا چکی ہے۔ مرد لڑاکا دنیا ماننے والے لوگوں میں یہ خواتین فائٹر بحث میں آئی ہے۔انکی خوب تعریف ہورہی ہے۔ ڈیانا نے 2015 میں ریسلنگ کرنا شروع کیا تھا۔ وہ بچپن سے ہی فائٹر بنناچاہتی تھی۔

 

View this post on Instagram

 

3 years ago I made my debut in Kuash Theatre and didn’t win. Fast forward 3 years later, I stand in the ring, victorious, as the new @mypwrestling Wrestlecon Champion. I want to say thank you to @ayezshaukatfonseka for believing in me since the day first day I set my foot inside the ring. Without your guidance and coaching, I wouldn’t be where I am today. To the fans, thank you. Thank you for all the love and support that you’ve continuously given to me and MyPW. Thank you so much for attending Fightback last night. It means a lot to us at MyPW. We do this out of passion – we do this because of you guys, the MyPW Nation. Once again, thank you from the bottom of my heart. And to everyone that asked: What’s next for Phoenix? Well, to answer that, this is only a beginning. No one has seen what Nor ‘Phoenix’ Diana is fully capable of. There is a new champion. This is the beginning of a new era. . . . This post cannot end without me thanking the biggest part of my success, The MyPW family. Thank you for taking me in, treating me as your own. Thank you for helping me and guiding me for the last 3 years. I wouldn’t have made it this far, I wouldn’t have garnered all these skills without you guys.❤️ picture credit @thesundaily / Asyraf Rasid

A post shared by Nor ‘Phoenix’ Diana (@nordianapw) on

پروفیشنل فائٹر ہونے کےساتھ ساتھ وہ ہاسپٹل میں کام بھی کرتی ہے۔ رنگ کے باہر وہ بہت ہی امن پسند لڑکی ہے۔ رنگ میں آنے کے بعد وہ دشمن کی خوب پٹائی کرتی ہے۔ انکے لیے سفر کافی مشکل رہا ہے۔ پہلے وہ ماسک پہن کرفائٹ کرتی تھی۔ تاکہ انہیں کوئی پہنچان نہ سکے۔ لیکن پچھلے سال میچ حیران کے بعد انہوں نے ماسک اتردیا اور حجاب پہن کر سبھی کے سامنے آئی۔
انہوں نے کہا پہلے صرف ماسک کے ساتھ کشتی کرتی تھی۔ کیونکہ یہ میری پہنچان کا حصہ تھی۔ میں اس وقت حجاب کے طور میں میرے خلاف سماجی فیصلوں سے ڈرتی تھی۔ لیکن پچھلے سال میں نے ماسک ہٹانے کا فیصلہ کیا۔ کیونکہ میں اپنی پہچان بنانا چاہتی تھی۔