Type to search

قومی

جموں وکشمیر:7 مہینے بعد رہا کیے گئے سابق وزیر اعلی فاروق عبداللہ

سرینگر،13مارچ(اردو پوسٹ انڈیا ڈاٹ کام) جموں و کشمیر میں آرٹیکل 370 اور آرٹیکل 35 اے کے خاتمے کےبعد حراست میں لیے گئے سابق وزیراعلی اور نیشنل کانفرنس رہنما فاروق عبداللہ کورہا کردیا گیا ہے۔ انہیں پبلک سیفٹی ایکٹ کے تحت حراست میں لیا گیا تھا۔ انکے ساتھ ہی انکے بیٹے عمر عبداللہ اور پی ڈی پی چیف اور سابق وزیراعلی محبوبہ مفتی کو بھی حراست میں لیا گیا تھا۔ رہا ہونے پر عبداللہ نے کہا، آج میں آزاد ہوں، میرے پاس بیاں کرنے کے لیے الفاظ نہیں ہے۔ فی الحال میں کسی سیاسی مسئلے پر نہیں بات کروں گا جب تک سبھی ساتھی رہا نہیں ہوجاتے، بتادیں کہ جموں کشمیر سے آرٹیکل 370 ہٹائے جانے کے بعد فاروق عبداللہ کو حراست میں لیا گیا تھا، جمعہ کو انکو رہا کردیا گیا ۔ ان پر لاگئے گئے پبلک سیفٹی ایکٹ بھی ہٹا دیا گیا ہے۔ وہ قریب سات مہینے سے حراست میں تھے۔ فاروق عبداللہ کو انکے بیٹے اور سابق وزیراعلی عمر عبداللہ اور دیگر رہنماؤں کے ساتھ 5 اگسٹ کو حراست میں لے لیا گیا تھا۔ بتادیں کہ کچھ دن پہلے آٹھ جماعتوں نے بی جے پی کی قیادت والی حکومت سے مانگ کی تھی کہ کشمیر میں حراست میں رکھے گئے سبھی رہنماؤں کو جلد سے جلد رہا کیا جائے۔ حراست میں رکھے گئے رہنماؤں میں تین سابق وزیراعلی فاروق عبداللہ، عمر عبداللہ اور محبوبہ مفتی شامل ہے۔

Srinagar: National Conference leader Farooq Abdullah released from detention pic.twitter.com/eUgs3pH8y8

— ANI (@ANI)

March 13, 2020