Type to search

ٹی وی اور فلم

بپی لہری برتھ ڈے اسپیشل: بالی ووڈ کے ڈسکو کنگ

بپی لہری

ممبئی، 27 نومبر (اردو پوسٹ انڈیا ڈاٹ کام) بالی ووڈ کو راک اور ڈسکو میوزک سے روبرو کراکر لوگوں کو اپنی میوزک پر تھرکنے والے مشہور سنگیت کار اور گائیک بپی لہری 27 نومبر 1952 کو کولکتہ میں انکی پیدائش ہوئی – بپی لہری کا حقیقی نام آلوکیش لہری تھا ۔ سونے کے زیوارت پہننے رہنے والے بپی دیکھنے میں جتنے الگ ہیں، انکا میوزک بھی اتنا ہی الگ ہے-

بپی لہری نے 70 کے دہائی میں بالی ووڈ میں قدم رکھا اور 80 کے دہائی تک چھائے درہے، بپی کو پہچان سال 1975 میں آئی فلم زخمی سے ملی- حالانکہ اس سے آگے کا سفر کچھ خاص نہیں رہا- سال 2011 میں انہوں نے ودیا بالن کی فلم ڈرٹی پکچر میں “او لا لا —-” گانا گایا تھا، جو سپر ہٹ ہوا-

اپنے اس نئے تجربے کی وجہ سے، بپی کو اپنے ابتدائی کیریئر میں کافی تنقید کا سامنا کرنا پڑا ، لیکن بعد میں ان کی موسیقی کو سامعین نے سراہا اور وہ فلم انڈسٹری میں ‘ڈسکو کنگ’ کے نام سے مشہور ہوگئے۔

ان کے والد اپریش لہری بنگالی گلوکار تھے جبکہ والدہ ونسری لہری موسیقار اور گلوکارہ تھیں۔

بپی سیاست کی دنیا میں بھی ہاتھ آزمانے سے پچھے نہیں رہے، 2014 کے لوک سبھا انتخابات میں انہوں نے بی جے پی کے ٹکٹ پر انتخاب لڑا لیکن وہ ہار گئے تھے- بپی کے گائے گیت ممبئی سے آیا میرا دوست، آئی ایم اے ڈسکو ڈانسر، زوبی – زوبی، یاد آر ہا ہے تیرا پیار، یار بنا چین کہاں رے، تما تما لوگے، آج بھی لوگوں کی زبان پر ہے-

گھر میں فلمی ماحول ہونے کی وجہ سے ان کا رجحان بھی موسیقی کی جانب بڑھنے لگا اور وہ موسیقی کی دنیا میں بین الاقوامی شہرت حاصل کرنے کا خواب دیکھنے لگے۔

سال 1973 میں جلوہ گر فلم ’’ننھا شکاری‘ بطور موسیقار ان کے کیرئیر کی پہلی ہندی فلم تھی لیکن بدقسمتی سے یہ فلم بھی ناکام رہی۔

کنگ آف پاپ مائیکل جیکسن، بپی کے بہت بڑے مداح تھے، انہوں نے مبمبئی میں منعقد اپنے شو میں بپی کو مدعو کیا تھا،  45 سال کے فلمی کیریئر میں بپی نے تقریبا 500 سے زائد فلموں میں کے لیے گانے کمپوز کیئے ہیں، بپی لہری کے دو بچے ہیں، ایک بیٹا بپا لہری اور بیٹی ریما لہری، بپی لہری کا ایک پوتا بھی ہے- پورا خاندان لائم لائٹ سے دور رہتا ہے-

Tags: