Type to search

جرائم و حادثات

کالج میں مشتبہ حالات میں لڑکی کی موت، پولیس نے باپ کو ماری لات

حیدرآباد،27فروری(اردو پوسٹ انڈیا ڈاٹ کام) تلنگانہ کے سنگا ریڈی ضلع میں چہارشنبہ کو ایک شرمناک واقع کا ویڈیو سوشل میڈیا پر تیزی سے وائرل ہوا ہے- ایک باپ جسکی بیٹی کی مشتبہ حالت میں موت ہوئی تھی-  اسے پولیس والے لات مارتے دیکھ رہے ہیں- باپ اپنی بیٹی کی لاش کو آگے بڑھنے سے روک رہا ہے اور اسے پولیس والے ہٹا رہے ہیں، اسی دوران ایک پولیس والے نے اسے لات مارتا دیکھائی دے رہا ہے-

سنگاریڈی ضلع میں واقع نارائنا جونیئر کالج میں 11ویں پڑھنے والی 16 سال کی طالب علم سندھیا رانی نے مبینہ طور پر ہاسٹل میں پنکھے سے لٹک کر خودکشی کرلی تھی- اسکے خاندان والے کالج انتظامیہ پر لاپرواہی کا الزام لگا رہے تھے- انکا الزام تھا کہ انکی بیٹی پچھلے 4 دنوں سے بیمار تھی، طالب علم کو پرائیوٹ ہاسپٹل میں لے جایا گیا جہاں اسے پہلے سے مردہ قرارد دیا گیا، اسکے بعد اسکے لاش کو پوسٹ مارٹم کے لیے پٹن چیرو کے سرکاری ہاسپٹل میں لے جایا گیا-

فریجر میں ڈالکر طالب علم کی لاش مردہ خانہ میں رکھا گیا تھا- ہاسپٹل میں اس وقت ہنگامہ ہوگیا جب درجن بھر طالب علموں کے ایک گروپ نے اسے لاش کو زبردستی مردہ خانہ سے نکال لیا تاکہ پرائیوٹ کالج میں اسے رکھ کر احتجاج کیا جاسکے- اسی دوران پولیس والے طالب علم کی لاش کو تیزی سے مردہ خانہ کی طرف لے جانے لگے- تبھی لڑکی کے والد اپنی بیٹی کی لاش کے آگے لیٹ گئے، اسکے بعد ایک پولیس والے نے باپ کو لات سے ماردیا- متعلقہ پولیس اہلکار کی انکوائری کا حکم دیا گیا ہے-

Tags:

You Might also Like