Type to search

صحت

ہفتے میں 1 یا 2 بار دن میں سونے سے دل کا دورہ پڑنے کا خطرہ ہوگا کم

ہیلتھ ڈسک،(اردوپوسٹ ڈاٹ کام) اگر آپ کو سونا بہت پسند ہے ، جھپکی لینا آپ کی پسندیدہ مشغلہ ہے تو آپ کے لیے ایک خوشخبری ہے، ہارٹ نام کے جنرل میں شائع ایک نئی اسٹیڈی میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ ویسے لوگ جو دن کے وقت جھپکی لیتے ہیں یا سو جاتے ہیں انہیں ہارٹ اٹیک آنے کا خطرہ کم ہوجاتا ہے۔ی سوئٹزرلینڈ کے یونیورسٹی ہاسپٹل آف لاسین کی رسیرچ ٹیم نے ایک اسٹیڈی کی اور وہ اس نتیجے پر پہنچے کہ ویسے لوگ جو ہفتے میں ایک یا دو بار دن کے وقت سوتے ہیں ان میں ہارٹ اٹیک اور اسٹورک کا خطرہ 50 فیصد تک کم ہوجاتا ہے۔ ان لوگوں کامقابلے میں جو دن میں بالکل نہیں سوتے۔

3462 شرکا پر 5 سال تک رکھی گئی نظر
اس اسٹیڈی کے لیے محقیقین نے 35 سے 75 سال کے درمیان کے 3 ہزار 462 سوئس بالغوں کی سرگرمیوں کو قریب 5 سال تک ٹرایک کیا ۔ جب یہ اسٹیڈی شروع ہوئی اس وقت اسٹیڈی میں شامل 58 فیصد شرکا نے کہا کہ انہوں نے پچھلے ہفتہ دن کے وقت جھپکی نہیں لی تھی جبکہ 19 فیصد نے کہا کہ انہوں نے ایک یا دو بار جھپکی لی۔ قریب 12 فیصد نے 3 سے 5 بار اور 11 فیصد نے 6 سے 7 بار جھپکی لی۔

دن میں جھپکی لینے پر دل کی بیماری کا خطرہ 48 فیصد کم
اسٹیڈی کے ختم ہونے تک محقیقین اس نتیجے پر پہنچے کہ ویسے لوگ جنہوں نے ہفتے میں ایک یا دوبار دن کے وقت جھپکی لی یا ایسے ان میں ہارٹ اٹیک، اسٹروک اور ہارٹ فیلیر کا خطرہ 48 فیصد تک کم ہوگیا ان لوگوں کے مقابلے میں جو دن کے وقت پورے ہفتے بالکل نہیں سوئے۔ یہ اسٹیڈی آبزرویشنل تھا یعنی محقیقین نے اسکی وجہ اور اثر پرکوئی اسٹیڈی نہیں کی کہ آخر کیوں دن میں کبھی کبھی جھپکی لیناہارٹ صحت کے لیے اچھا ہے۔

دن کے وقت صرف 20 منٹ کی جھپکی کافی
حالانکہ اسٹیڈی کے اہم مصنف کی مانیں تو دن میں جھپکی لینا دن کے لیے اس لیے اچھا مانا جاسکتا ہے کیونکہ نیند پوری نا ہونے پر اسٹروک کا لیول بڑھتا جاتا ہے وہ دن میں جھپکی لینے سے کم ہوجاتا ہے۔ حالاننکہ کتنی دیر تک سونا ہے یا جھپکی لینی ہے اس بارے میں اس اسٹیڈی میں کچھ بھی نہیں کہا گیا ہے۔لیکن نیشنل سلپ فاؤنڈیشن کی مانیں تو دن کے وقت 20 منٹ کی جھپکی کافی ہے۔ آپ کا موڈ بہتر بنانے کے ساتھ ساتھ آپ کو اور زیادہ الرٹ بنانے کے لیے۔

Tags: