Type to search

بین الاقوامی

کورونا وائرس پر ڈبلیو ایچ او کا انتباہ – کبھی ختم نہیں ہوسکتا کورونا، اس کے ساتھ جینا سیکھنا ہوگا

جنیوا،14مئی (اے ایف پی) دنیا بھر میں کورونا وائرس کے معاملات بڑھتے ہی جا رہے ہیں۔ کوویڈ 19 کے 43لاکھ سے زیادہ کیس اب تک سامنے آچکے ہیں۔ قریب تین لاکھ لوگوں کی موت ہوچکی ہے۔ عالمی ادارہ صحت نے اس بیماری کو عالمی وبا اعلان کرچکا ہے۔ چہارشنبہ کو ڈبلیو ایچ او نے انتباہ دیتے ہوئے کہا کہ ہوسکتا ہے کہ کورونا وائرس کبھی ختم نہ ہو اور دنیا کو اسکے ساتھ جینا سیکھن ہوگا۔

ڈبلیو ایچ او نے کہا کہ کورونا وائرس پوری طرح سے ختم نہیں ہوگا۔ تنظیم کے ہنگامی خدمات کے ڈائریکٹر مائیکل ریان نے جینوا میں منعقد کی گئی ایک پریس کانفرنس میں کہا، پہلی بار انسانی آبادی میں ایک نیا وائرس داخل ہورہا ہے اور اس لیے یہ اندازہ لگانا بہت مشکل ہے کہ ہم اس پر کب حاوی ہونگے۔ کورونا ہمارے کمیونیٹیز میں صرف ایک دیگر ینڈمک وائرس بن سکتا ہے اور ہوسکتا ہے کہ یہ وائرس کبھی نہیں ختم ہو۔

انہوں نے آگے کہا کہ ایچ آئی وی ختم نہیں ہوا لیکن اس وائرس کے ساتھ شرطوں پر جینا سیکھ گئے۔ ذیادہ تر ملکوں نے اس وائرس سے بچاؤ کے لیے لاک ڈاؤن کیا لیکن ڈبلیو ایچ او نے خبردار کیا تھا کہ اسکی کوئی گیارنٹی نہیں ہے کہ اسکے بعد یہ نہ پھیلے اور ہمیں اس وائرس سے نجات مل پائے، فی الحال صورتحال عام ہونے میں کافی لمبا وقت لے گا۔

مائیکل ریان نے دنیا کے کئی ملکوں میں صحت کے عملے پر ہورہے حملوں کی بھی مذمت کی۔ انہوں نے کہا کہ اپریل میں 11 ممالک میں صحت کے عملے پر سنگین حملوں کے 35 واقعات سامنے آئے تھے، صحت عملے پر حملے مایوس کن ہیں۔

Tags:

You Might also Like