Type to search

قومی

مہاراشٹر کا یہ مسلمان خاندان لاک ڈاؤن میں روزانہ 800 افراد کو کھلا رہا ہے کھانا

ممبئی،27مارچ(اردو پوسٹ انڈیا ڈاٹ کام) مہاراشٹرامیں تعمیراتی کام میں لگے مزدور ، اسٹریٹ ہاکر، اور رکشا چلانے والوں کا ایک بڑا حصہ ہے جو روز کماتے ہیں اور روز خاندان کا پیٹ بھرتے ہیں۔ لیکن کورونا وائرس کی وجہ سے ہوئے لاک ڈاؤن کے بعد ایسے لاکھوں مزدوروں کے کی روزی روٹی خطرے میں پڑ گئی۔ ایسے میں کچھ مقامی لوگ سامنے آکر ان مزدوروں کی مدد کررہے ہیں۔ انہی میں سے ایک ہے ممبئی کا مسلم خاندان، جو کہ ضرورت مندوں کو کھانا مہیا کرا رہا ہے۔

یہ مسلم خاندان ضرورت مندوں کے لیے نہ صرف کھانا تیار کرتا ہے بلکہ اسے ان لوگوں میں باٹنے کا کام بھی کرتا ہے۔ خاندان کے رکن ابراہیم موتی والا نے کہا، کئی مزدور یہاں پھنسے ہوئے ہیں۔ جنہیں کھانا تک نصیب نہیں ہوپا رہا ہے۔ اگر خدا نے ہمیں اس لائق بنایا ہے کہ ایسے لوگوں کی مدد کرسکیں ، تو ہمیں یہ کرنا چاہیئے ۔ ہم ایک بار میں قریب 800 لوگوں کے لیے کھانا تیار کرتے ہیں۔

کوویڈ 19 وبائی امراض کو اور پھیلنے سے روکنے کی کوشش میں ملک میں تین ہفتہ کا بند جاری ہے اور پورا ملک کی رفتار تھم گئی ہے۔ لوگ گھروں میں ہی بند ہے اور اپر اور مڈل کلاس خاندان کے سامنے روزی روٹی کو لیکر مالی مورچہ پر اتنا بڑا بحران بھی نہیں ہے، لیکن غیر منظم علاقے میں کام کرنے والے مزدور اس بند سے بری طرح سے متاثر ہے۔ انکے پاس نہ تو کھانا کھانے کے پیسے ہیں اور نہ ہی گھر واپس جانے کا ذریعہ۔

فوٹو: اے این آئی سے لی گئی۔

Tags:

You Might also Like