Type to search

قومی

شہریت قانون پر کیرالا اسمبلی میں ہنگامہ، اراکین اسمبلی نے روکا گورنر کا راستہ

سی اے اے رد کرو، کے بینر دیکھائے، ایوان سے کیا واک آوٹ
ترونتاپورم،29جنوری(اردو پوسٹ انڈیا ڈاٹ کام) کیرالا میں کانگریس کے زیرقیادت یو ڈی ایف نے چہارشنبہ کو اسمبلی میں گورنر عارف محمد خان کا راستہ روکا اور شہریت ترمیمی قانون کے خلاف ’واپس جاؤ‘ کے نعرے لگائے اور بینر دیکھائے۔ یہ واقع تب ہوا جب وزیر اعلی پنارائی وجین اور اسپیکر پی شرراما کرشنن نے خان کو پالیسی خطاب کے لیے بلایا، مظاہرہ تقریبا 10 منٹ کے بعد مارشلوں نے طاقت کا استعمال کرکے مظاہرہ کرنے والوں کو ہٹایا اور گورنر کے لیے چیئر تک جانے کے لیے راستہ بنایا۔ گورنر کے نشست تک پہنچتے ہی قومی ترانہ بجایا گیا لیکن اپوزیشن کے رکن نشست کے قریب جمع ہوگئے قومی ترانہ پورا ہونے کے فوری بعد انہوں نے گورنر واپس جاؤ کے نعرے لگانے شروع کردیئے۔ جب خان نے اپنا پالیسی خطاب شروع کیا تو اپوزیشن ارکان نے نعرے بازی کرتے ہوئے اسمبلی سے واک آوٹ کیا۔

غور طلب ہے کہ شہریت قانون کے خلاف اسمبلی میں قراردات لانے والا پہلی ریاست تھی۔ اس قانون کے خلاف سپریم کورٹ جانے والی پہلی ریاست بھی کیرالا حکومت ہی تھی۔ ان دونوں مسئلوں پر حکومت کا گورنر عارف محمد خان سے ٹکراؤ سامنے آیا تھا۔ گورنر نے اسمبلی میں قرار دات لانے سے حکومت کے قدم کو غیر آئینی بتایا تھا۔ ریاستی حکومت کے اس قانون کے خلاف سپریم کورٹ پر بھی گورنر نے ناراضگی ظاہر کی ۔ تب انہوں نے کہا تھا کہ حکومت نے عدالت میں درخواست داخل کرنے سے پہلے انہیں اس بارے میں کوئی معلومات نہیں دی۔

Tags:

You Might also Like