Type to search

صحت

ماں کے دودھ کے فائدے : نومولود بچوں کے لیے 6 مہینے تک ماں کا دودھ ضروری

ماں کے دودھ کے فائدے

ہیلتھ ڈسک، (اردو پوسٹ انڈیا ڈاٹ کام) ماں کے دودھ کے فائدے : بچے کے لئے ماں کا دودھ قدرت کا بہترین تحفہ ہے۔ جدید ترین تحقیق سے یہ بات پوری طرح واضح ہوچکی ہے کہ ماں کا دودھ بچے کے لئے ایک مکمل اور غذائیت سے بھرپور غذا ہے جس کا کوئی بدل نہیں۔
بچے کی پیدائش کے فوراً بعد ماں کادودھ کولسٹرم کہلاتا ہے۔ ماں کا دودھ بچے کے لئے بہترین غذائیت کا حامل ہوتاہے۔

ماں کا دودھ نومولود کے لیے امرت کی طرح ہوتا ہے۔ اس لیے وزرات صحت اور عالمی اداکارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) کے مطابق ، بچہ جب تک چھ مہینے کا نہیں ہوجاتا ہے۔ تب تک کے لیے اسے صرف ماں کا دودھ پلانا چاہیئے۔

پیدائش کے چھ مہینے تک ماں کا دودھ ہی بچے کے لیے ضروری مکمل خوراک ہوتی ہے۔ ماں کے دودھ میں غذائی اجزاء ، معدنیات ، وٹامنز ، پروٹین ، چربی ، اینٹی باڈیز اور مدافعتی عوامل ہوتے ہیں، جو بچے کی نشوونما اور صحت کے لیے ضروری ہوتے ہیں۔ اس لیے 6 ماہ تک بچے کو ماں کا دودھ ضرور پلانا چاہیے۔

چھ ماہ تک ماں کا دودھ پینے والے بچے، جنہیں کسی وجہ سے ماں کا دودھ نہیں مل پاتا ہے، ان سے ذیادہ صحت ہوتے ہیں۔

 بعض اوقات ماؤں کو معلومات نہیں ہوتا اور وہ مختلف وجوہات کی بناء پر بچوں کو اپنا دودھ پلانا ترک کردیتی ہیں۔ ایسا کرنے سے بچہ کی صحت مند فائدوں سے مرحوم رہتا ہے۔

صحت مند عمل انہضام

ماں کا دودھ بچے کے نظام انہضام کے لیے سب سے بہترین غذا ہے۔ اس میں موجود غذائی اجزاء بچے کے ہاضمے میں آسانی ہوتی ہے۔ اسکے علاوہ ماں کے دودھ میں فائدہ مند پروبائیوٹک ہوتے ہیں۔ جو بچے کے نظام انہضام میں کسی بھی قسم کے انفیکشن دور کرتے ہیں۔

اچھی اور مکمل غذا

ماں کا دودھ بچے کے لیے ضروری اور مکمل خوراک ہوتا ہے۔ ماں کے دودھ میں موجود تمام غذائی اجزاء اس کی مکمل نشوونما کے لیے کام کرتے ہیں۔

ایلرجی سے چھٹکارا

ماں کا دودھ بچوں کے لیے سب سے زیادہ محفوظ ہوتا ہے۔ جس سے ان میں ایلرجی کا مسئلہ کم ہوتا ہے۔ جبکہ دیگر قسم کے دودھ سے ایلرجی ہونے کا ہمیشہ خطرہ رہتا ہے۔

مزاحمت کی صلاحیت

ماں کے دودھ میں ہائی پروٹین اور اینٹی باڈیز پائے جاتے ہیں، جو بچے کو سردی۔زکام ، چھاتی میں انفیکشن اور کان کے انفیکشن وغیرہ سے بچاتے ہیں۔ ساتھ ہی بچے کی بھی  قوت مدافعت بڑھاتے ہیں۔

ذہنی نشوونما

ماں کے دودھ میں لونگ۔چین پولی انسیچوریٹڈ فیٹی ایسڈز ہوتا ہے۔ جو بچے کی ذہنی نشوونما کرتا ہے، ساتھ ہی اس سے بچے کا دماغ بھی تیز ہوتا ہے۔

جسمانی ترقی

بچے کی پیدائش کے فوری بعد نکلنے والا ماں کا پہلا دودھ کو کولسٹرم وٹامن اے اور اینی باڈیز پر مشتمل ہوتا ہے۔ جو نوزائیدہ کی ضروریات کے مطابق تیار ہوتا ہے۔ اس کے علاوہ دودھ میں پائے جانے والے ، پروٹین ، وٹامن ، کیلشیم وغیرہ عنصر انکے جسمانی نشوونما میں مدد کرتے ہیں۔

بتادیں کہ 1 اگست ورلڈ بریسٹ فیڈنگ ویک (ڈبلیو بی ڈبلیو) کی شروعات کی نشانی ہے۔ اس ہفتہ بھر چلنے والے پروگرام میں 120 سے زائد ممالک حصہ لیتے ہیں۔
اس کا مقصد ماں۔بچے کی جوڑی کے صحت اور فلاح و بہبود کے لیے دودھ پلانے کو فروغ دینا، اسکی حفاظت کرنا اور اسکی حمایت کرنا ہے۔
ورلڈ الائنس فار بریسٹ فیڈنگ ایکشن (ڈبلیو اے بی اے) نے سال 1990 میں اس پروگرام کا افتتاح کیا اور سال 1992 میں اسکا پہلا جشن ہوا۔

بچے کے لیے دودھ پلانے کے فائدے

ماں کا دودھ بچے کو طاقتور اور صحت مند بناتا ہے۔ اس میں وٹامن اے کی اچھی مقدار میں ہوتی ہے۔
خود ماں بچے کو دودھ پلانے کے باعث کئی بیماریوں سے محفوظ رہتی ہے مثلاً چھاتی کا کینسر، اور ہڈیوں کا بھربھراپن ۔
ماں کے دودھ میں انفیکشن مخالف عوامل ہوتے ہیں جو مختلف بیماریوں سے ننھے بچوں کی حفاظت کرتے ہیں۔
ماں کادودھ بچوں کو دست ، سانس کی بیماریوں اور کان کے انفیکشن کے علاوہ دماغ کی جھلی کی سوجن اور پیشاب کی نالی کے انفیکشن سے محفوظ رکھنے میں مددگار ثابت ہوتا ہے۔
بچے کی نشوونما کے لیے بہتر غذائیت فراہم کرتا ہے۔
انفیکشن اور بیماریوں سے بچے کی حفاظت کرکے امیونٹی کو بڑھاتا ہے، جس سے بچوں کی شرح اموات اور بیماری کم ہوتی ہے۔
آنتوں میں فائدہ مند بیکٹریا کی نشوونما کی مدد سے ہاضمے کو بڑھاتا ہے۔
ماں اور بچے کے درمیان اعتماد پیدا کرتا ہے جس سے بچہ محفوظ اور آرام دہ محسوس کرتا ہے۔
ماں کا دودھ آسانی سے ہضم ہونے والا، آسانی سے جذب ہونے والی غذا ہے جس میں پروٹین ، چربی ، وٹامن ، معدنیات ، اینٹی باڈیز ، مدافعتی خلیات ، ہارمونز ، فائدہ مند بیکٹیریا اور بہت سے غذائی اجزاء شامل ہوتے ہیں۔

ماں کے لیے دودھ پلانے کے فائدے
کچھ قسم کے کینسر کا کم خطرہ، جیسے کے ڈمبگرنتی اور چھاتی کا کینسر۔
ہڈیوں کی بیماریوں جیسے آسٹیوپوروسس اور گٹھیا کو کم کرتا ہے۔
دودھ پلانے کے دوران جلد سے جلد کا رابطہ ماں اور بچے دونوں کی مدد کرتا ہے۔
جیسا کہ بچوں کے لیے ہوتا ہے، دودھ پلانے میں ماؤں کو بھی فائدہ ہوتا ہے۔
بچے کی پیدائش کے بعد فوری علاج صحت مند فائدہ۔

ماں کے دودھ کے پروڈکشن کے دوران ہونے والی کیلوری برن آوٹ کی وجہ تیزی سے پوسٹ پارٹم وزن کم ہوتا ہے۔

دودھ پلانا ماں اور بچے کے لیے ایک خوبصورت تجربہ ہوتا ہے۔ بچوں کے لیے دودھ پلانا غذائیت کا ایک ذریعہ ہے جو ان کی قوت مدافعت کو بڑھاتا ہے اور مناسب نشوونما اور ترقی کو فروغ دیتا ہے۔


(نوٹ: صلاح سمیت یہ مضمون صرف عام معلومات فراہم کرتی ہے۔ یہ کسی بھی طرح سے طبی رائے کا متبادل نہیں ہے، مزید معلومات کے لئے ہمیشہ کسی ماہر یا اپنے ڈاکٹر سے رجوع کریں۔ اردو پوسٹ اس معلومات کے لیے ذمہ داری قبول نہیں کرتا ہے۔ )

Tags:

You Might also Like