Type to search

ٹی وی اور فلم

سنجے دت کو ملا متحدہ عرب امارات کا گولڈن ویزا ، بیٹی نے مبارکباد

سنجے دت گولڈن ویزا

فلمی ڈسک،27 مئی (ذرائع) ہندی سنیما میں اپنی عمدہ اداکاری سے پہچان بنانے والے ایکٹر سنجے دت کو متحدہ عرب امارات (یو اے ای) کا گولڈن ویزا مل گیا ہے۔ چہارشنبہ کو سنجے دت نے خود سوشل میڈیا پر اس کی اطلاع دی۔

تقریبا تین دہائی سے اپنی بااثر اداکاری سے ناظرین کے دل میں ایک خاص مقام بنانے والے سنجے دت نے گولڈن ویزا دینے کے لیے یو اے ای کے عہدیداروں کا شکریہ ادا کیا۔ معلومات کے مطابق سنجے دت بالی ووڈ میں گولڈن ویزا پانے والے پہلے شخص ہے۔

سال 1959 میں 29 جولائی کو ممبئی میں پیدا ہوئے بالی ووڈ اداکار سنجے دت نے انسٹاگرام اور ٹیوٹر پر دو تصویریں شیئر کرتے ہوئے فینس کے ساتھ یہ خوشخبری شیئر کی ہے۔

چنندہ اداکاروں میں شمار سنجے دت ان میں ایک تصویر میں وہ اپنا پاسپورٹ دیکھا رہے ہیں۔ جبکہ دوسری فوٹو میں وہ میجر جنرل محمد الماری کے ساتھ نظر آرہے ہیں۔

محمد الماری دبئی میں جنرل ڈائریکٹوریٹ آف ریسیڈنسی اینڈ فارین آفیرس کے ڈائریکٹر جنرل ہیں۔

گولڈن ویزا کا مطلب یہ ہے کہ اب سنجے دت یو اے ای میں 10 سال تک رہے سکتے ہیں۔ عام طور پر یہ ویزا پہلے بزنسمین اور سرمایہ کاروں کے ساتھ ہی ڈاکٹرس اور ایسے ہی دوسرے پرفیشن کے لوگوں کو دیا جاتا تھا۔ حالانکہ بعد میں اسکے قواعد میں بدلاؤ کیا گیا۔

 

View this post on Instagram

 

A post shared by Sanjay Dutt (@duttsanjay)

 

فوٹوز شیئر کرتے ہوئے سنجے دت نے لکھا، میجر جنرل محمد الماری کی موجودگی میں یو اے ای کا گولڈ ویز پاکر فخر محسوس کررہا ہوں۔ اس اعزاز کے لیے یو اے ای حکومت کا شکر گذار ہوں۔

مشہور فلم ایکٹر سنیل دت اور نرگس کے گھر پیدا ہوئے سنجے دت نے فینس کے ساتھ ساتھ انکی بیٹی ترشالا دت نے بھی والد کے پوسٹ پر کمنٹ کیا ہے۔ ترشالا نے لکھا، ڈیڈی آپ شاندار دیکھ رہے ہیں۔ آئی لو یو۔

سنجے دت کے ورک فرنٹ کی بات کریں تو سنجے دت ’کے جی ایف چیپٹر 2 میں نظر آنے والے ہیں۔ کنڑ زبان میں بنی اس فلم میں ایکٹر یش اہم رول میں ہے۔

یش کے علاوہ فلم میں روینہ ٹنڈن بھی ہونگی۔ اسکے علاوہ سنجے دت شمشیرا میں بھی نظر آئیں گے۔

سنجے دت کے فلمی کیریئر کا آغاز بطور چائلڈ آرٹسٹ اپنے والد سنیل دت کے بینر تلے بنی فلم ریشما اور شیراسےہوا تھا اور بطور ہیرو کیریئر کی شروعات 1981 میں ریلیز ہوئی فلم ’روکی‘ سے ہوا۔

Tags:

You Might also Like