Type to search

قومی

برقع میں آئی ‘اسٹوڈنٹ آف دی ایئر’ نے کانووکیشن میں یونیفارم پہننے سے کیا انکار، نہیں ملی ڈگری

رانچی16ستمبر،(اردو پوسٹ ڈاٹ کام) جھارکھنڈ کے رانچی یونیورسٹی کے مارواڈی کالج کے گریجویشن تقریب کا انعقاد عمل میں آیا کئی طالب علموں کو ڈگری اور گولڈ میڈل دیا گیا، 5 سال بعد منعقد گریجویشن تقریب میں 63 طالب علموں کو گولڈ سے نوازا گیا، لیکن بحث اوور آل بیسٹ گریجویٹ ناشط فاطمہ کو لیکر ہورہا ہے برقع میں پہنچی طالب علم کو جب یونیفارم پہننے کو کہا گیا تو وہ بغیر ڈگری لیے ہی واپس ہوگئی-

رانچی یونیورسٹی کے کانووکیشن میں مارواڑی کالج کا گریجویشن تقریب چل رہا تھا چانسلر درواپدی ٹاپ گریجویٹ کو مخاطب کرنے اسٹیج پر تھے، سب سے پہلے اوور آل بیسٹ گریجویٹ نشاط فاطمہ کا نام پکارا گیا، 93.50 فیصدی لانے والے نشاط برقع پہننے گولڈ میڈل اور سرٹیفیکٹ لینے اسٹیج کے پاس جیسے ہی پہنچی انہیں تقریب کے لیے مقررہ ڈریس کوڈ میں انے کو کہا گیا لیکن نشاط بغیر برقع پہننے میڈل لینے سے انکار کردیا اور واپس لوٹ گئی- معاملے پر رانچی یونیورسٹی کے وائس چانلس کا کہنا ہے کہ اس معاملے پر بہتر  جواب دہی مارواڑی کالج کی ہوگی اور اس پر بھی کچھ بھی نہیں کہنا چاہتے-

وہیں نشاط کے بارے میں بتاتے ہوئے انکے شعبہ کے سربراہ بتاتے ہیں کہ رانچی یونیورسٹی کی طرف سے مقرر کردہ ڈیس کوڈ میں ہی ڈگری دیا جانا تھا اور جو کہ نشاط نے ڈریس کوڈ پہننے سے انکا رکیا اس لیے پورٹوکول کے تحت اسے ڈگری نہیں دی گئی لیکن وہ کبھی بھی کالج آ کر اپنا گولڈ میڈل اور ڈگری لے سکتی ہے-

Tags:

You Might also Like