Type to search

صحت

کالج مرچ کے فائدے: امیونٹی بڑھانے میں مددگار

کالج مرچ کے فائدے

ہیلتھ ڈسک، (اردو پوسٹ انڈیا ڈاٹ کام) کالی مرچ کو انگریزی میں بلیک پپپر کہتے ہیں۔ اسکا سائنٹفک نام پیپر نگرم ہے۔ کالی مرچ ایک پھولدار بیل ہے، اسے اسکے پھل کے لیے کاشت کیا جاتا ہے۔

اسے عام طور پر اسے خشک کر کے مصالحہ کے طور پر استعمال کیا جاتا ہے۔

کالی مرچ کے پودوں کا اصل مقام جنوبی ہندوستان ہے۔ ہندوستان کے باہری ممالک میں بھی اسکی کاشت کی جاتی ہے۔

کالی مرچ، سفید مرچ کی ایک خاص قسم ہے جسکی کٹائی فصل پکنے سے پہلے ہی ہوجاتی ہے۔

وائٹ اور بلیک مرچ دونوں ایک ہی پودھے کے پھل ہیں۔ کالی مرچ کے پودے کی لمبائی 4 میٹر (13فٹ) ہوتی ہے۔

بس اپنے رنگ کی وجہ سے انکا استعمال الگ ہوجاتا ہے۔ سفید مرچ کا استعمال عام طور پر ہلکے رنگ کے پکوان جیسے سوپ، سلاد ، میں استعمال کیا جاتا ہے۔

عام طور پر باورچی خانے میں کھانے کا ذائقہ بڑھانے اور مسالہ میں استعمال ہونے والی کالی مرچ کھانے کے کئی فائدے ہیں۔

اسکا ذیادہ استعمال بھی آپ کی صحت کو نقصان بھی پہنچا سکتی ہے اس لیے ضروری ہے کہ کالی مرچ کے استعمال کرنے میں احتیاط کریں۔

کالی مرچ عام طور پر ہر گھر میں استعمال کیا جانے والا مسالہ ہے۔

یہ اپنے مختلف صحت سے متعلق فائدوں کے لیے پورے ہندوستان میں استعمال کیا جاتا ہے۔

مسالہ اینٹی بیکٹیریل اور اینٹی انفلیمینٹری خصوصیات سے بھرا ہوا ہے جو انفیکشن کو دور رکھنے میں مدد کرتا ہے۔

یہ کسی بھی زخم یا سوجن کی وجہ سے ہونے والی پریشانی سے راحت فراہم کرکے بھی مدد کرتا ہے۔

جان کر حیرانی ہوگی کہ کالی مرچ وٹامن سی سے بھر پور ہوتی ہے۔

یہ قدرتی اینٹی بائیوٹک کے طور پر بھی کام کرتا ہے۔

جبکہ ہم مختلف پکوان کو بنانے کے لیے کالی مرچ کا استعمال کرتے ہیں،

کالج مرچ کے فائدے کے بارے میں بات کریں تو اسے  امیونٹی بڑھانے کے لیے اسے اپنی روزمرہ کی ڈائٹ میں شامل کرنے کے چند آسان طریقے یہاں بتائے جارہے ہیں۔

کالی مرچ کی چائے
کالی مرچ میٹابولزم کو بوسٹ کرتی ہے اور اضافی وزن کم کرنے میں مدد کرتی ہے۔

امیونٹی بڑھانے اور وزن کم کرنے کے لیے آپ روز صبح کالی مرچ کی چائے پی سکتے ہیں۔

کالی مرچ کی چائے بنانے کے لیے آپ کو باریک کالی مرچ، نیمبو کا رس اور کٹا ہوا ادرک چاہیئے۔

دوکپ پانی ابالیں اور اس میں چار سے پانچ کالی مرچ، ایک نیمبو کا رس اور تازہ کٹا ہوا ادرک ڈالیں،

اسے پانچ منٹ تک بھیگنے کے لیے چھوڑ دیں، چائے کو چھان کر گرم کرلیں۔

کالی مرچ کو اپنی ڈائٹ میں شامل کرنے کا سب سے آسان طریقہ ہے کہ آپ اپنے سلاد پر تھوڑا چھڑکیں،

آپ اپنے معمول کے سلاد کے لیے نمک اور کالی مرچ کا ملا کر استعمال کرسکتے ہیں۔

ٹماٹر کالی مرچ کا سوپ
کالی مرچ کو ٹماٹر کے سوپ کے ساتھ ملانے سے گرمی بڑھے گی اور آپ کی قوت مدافعت مستحکم (مضبوط) ہوگی۔

ٹماٹر کا سوپ اینٹی آکسیڈینٹ، وٹامن سی ، بیٹا۔کیروٹین سے بھرپور ہے۔

یہ سب فری۔پراکٹیکل ایکٹیویٹی کو روکنے میں مدد کرتا ہے اور آکسائڈیٹیو تناؤ کو کم کرتا ہے جو آپ کی امیونٹی کو کمزور کرسکتا ہے۔

طریقہ سوپ بنانے کا : دو سے تین ٹماٹر، ایک چمچ باریک کالی مرچ، تین سے چار لہسن کی کلیاں، ایک انچ ادرک، ایک انچ دارچینی کی چھڑی، 25 گرام پیاز، مزے کے لیے نمک اور ایک چمچ تیل۔

سوپ کے لیے ٹماٹر، دار چینی اور باریک کالی مرچ کو پانی میں ابالے، اسے ٹھنڈا ہونے دیں، اور مکسر میں ملا دیں۔

تھوڑا سا تیل گرم کریں، لہسن اور کٹے ہوئے پیاز بھونے اور ٹماٹر کا اسٹاک اور مزے کے لیے نمک ڈالیں،

اسے کچھ دیر تک ابالے، اس میں تھوڑی سی کوٹی کالی مرچ ڈال کر پیش کریں۔

سردی کے لیے فائدے مند
کالی مرچ کا استعمال کرنے سے سردی کے موسم میں ہونے والی کھانسی اور زکام سے آپ کو راحت ملتی ہے۔

ساتھ ہی اسکے استعمال سے آپ کا گلہ بھی صاف رہتا ہے۔

اتنا ہی نہیں کئی لوگوں کو زکام کی وجہ سے بال جھڑنے کا مسئلہ ہوجاتا ہے۔

اس سے بھی آرام ملتا ہے۔ اسکا استعمال کئی قسم کی بیماریوں سے آپ کو راحت دیتا ہے۔

دانتوں کے لئے فائدہ مند
کالی مرچ کا استعمال دانتوں سے متعلق مسائل سے راحت دیتا ہے۔ کالی مرچ سے مسوڑوں کے درد میں بہت جلدی آرام دیتا ہے۔

اگر آپ کالی مرچ، جائفل اور سوندا نمک کو ملاکر چرن بنا کر کچھ بوند سرسوں کے تیل میں ملا کر دانتوں اور مسوڑوں میں لگاکر آدھے گھنٹے بعد منہ صاف کرلیں۔

اس سے آپ کو دانت اور مسوڑوں میں درد ہونے والا مسئلہ دور ہوجائے گا۔

ہچکی کو دور کریں
ہرے پودینے کی 30 پتیاں، 2 چمچ سونف ، مسری اور کالی مرچ کو پیس کر ایک گلاس پانی میں ابال لیں۔

اس مرکب کے پانی سے ہچکی کا مسئلہ دور ہوجاتا ہے۔

پانچ کالی مرچ کو جلاکر پیس کر بار۔بار سونگھنے سے ہچکی کا مسئلہ دور ہوجاتا ہے۔


(نوٹ: صلاح سمیت یہ مضمون صرف عام معلومات فراہم کرتی ہے۔ یہ کسی بھی طرح سے طبی رائے کا متبادل نہیں ہے، مزید معلومات کے لئے ہمیشہ کسی ماہر یا اپنے ڈاکٹر سے رجوع کریں۔ اردو پوسٹ اس معلومات کے لیے ذمہ داری قبول نہیں کرتا ہے۔ )