Type to search

قومی

پانچ ریاستوں میں سات مرحلوں میں اسمبلی انتخابات، 10 مارچ کو آئیں گے نتائج

پانچ ریاستوں اسمبلی انتخابات

نئی دہلی، 8 جنوری (اردو پوسٹ انڈیا ڈاٹ کام) پانچ ریاستوں میں اسمبلی انتخابات کی تاریخوں کا اعلان ہوگیا ہے، یوپی میں سات مرحلے میں ووٹنگ کرائی جائے گی- الیکشن کمیشن نے ہفتہ کو اسمبلی انتخابات کی تاریخوں کا اعلان کرتے ہوئے اعلان کیا ہے-

الیکشن کمیشن نے اتر پردیش، پنجاب، اتراکھنڈ، گوا اور منی پور کے انتخابی شیڈول کا ہفتہ کے روز اعلان کیا جس کے مطابق ان تمام ریاستوں میں انتخابی پروگرام سات مرحلوں میں مکمل کیے جائیں گے۔

یوپی میں 10 فروری کو پہلے مرحلے اور 7 مارچ کو آخری مرحلے کی ووٹنگ ہوگی- سبھی اسمبلی انتخاب کے نتائج 10 مارچ کو آئیں گے-

پانچ ریاستوں میں کل 690 اسمبلی سیٹوں کے لیے ووٹ ڈالے جائیں گے۔ انتخابی نوٹیفکیشن فوری طور پر جاری کر دیا گیا ہے اور اس کے ساتھ ہی انتخابی ضابطہ اخلاق بھی نافذ ہو گیا ہے۔ انتخابات کے دوران کووڈ کے رہنما خطوط پر سختی سے عمل کیا جائے گا۔

یوپی میں 14 فروری کو دوسرا اور 20 فروری کو تیسرے مرحلے کی ووٹنگ ہوگی- الیکشن کمشین نے کہا کہ اگر کوئی بھی انتخابی ریالی یا مہم سے جڑے قواعد کی خلاف ورزی کرتا ہے تو اس پر ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ یا ریٹرننگ آفیسر کر سکتے ہیں۔ انہیں مزید ریلی نکالنے سے روکا جا سکتا ہے۔

کورونا وائرس کے خطرے کے پیش نظر انتخابی ریلیوں پر پابندی لگا دی گئی ہے۔ صرف ورچوئل ریلیوں کی اجازت دی گئی ہے۔ الیکشن کمیشن کے بیان کے مطابق اس بار خواتین ووٹروں کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے۔

پانچ ریاستوں کےانتخابی پروگرام کا اعلان کرتے ہوئے چیف الیکشن کمشنر سشیل چندرا نے کہا کہ ضلعی انتخابی افسر اور کمیشن کے نگران انتخابی ریلیوں پر پابندی اور دیگر ہدایات کی تعمیل پر کڑی نظر رکھیں گے اور خلاف ورزی کی صورت میں کارروائی کی جائے گی۔

یوپی میں کل 403 اسمبلی سیٹ ہے، پنجاب میں 117، اتراکھنڈ میں 70، منی پور 60 اور گوا میں 40 سیٹیں ہیں-
سات ریاستوں کے لیے ووٹنگ سب سے پہلے 10 فروری کو شروع ہوگی- 10 مارچ کو سبھی ریاستوں میں گنتی ہوگی-

اترپردیش میں 10 فروری، 14 فروری ، 20 فروری، 23 فروری، 27 فروری، 3 مارچ اور 7 مارچ کو ووٹنگ ہوگی-
پنجاب ، گوا اور اتراکھنڈ میں ایک ساتھ 14 فروری کو ووٹنگ ہوگی- منی پور میں دو مرحلے میں ووٹنگ ہوگی- جو 27 فروری اور 3 مارچ کو کرایا جائے گا-

کوویڈ کو ذہن میں رکھتے ہوئے اس بار پولنگ اسٹیشنوں کی کل تعداد میں 16 فیصد کا اضافہ کیا گیا ہے۔ مجموعی طور پر دو لاکھ 15 ہزار سے زائد پولنگ بوتھ بنائے گئے ہیں اور ہر بوتھ پر ووٹروں کی زیادہ سے زیادہ تعداد ڈیڑھ ہزار سے کم ہو کر 1200 رہ گئی ہے۔ اس بار ووٹنگ کا وقت ایک گھنٹہ بڑھا دیا گیاہے۔

الیکشن کمیشن نے کہا کہ کورونا کے دور میں محفوظ انتخابات کرانے کے لیے قوانین کا سختی سے عمل کرایا جائے گا- اسکے لیے ریاستوں کے ہیلتھ سکریٹریوں کو اس کے لیے اہم ذمہ داری دی گئی ہے۔

کورونا کے اومیکرون ویرینٹ کے خطرے کے پیش نظر 15 جنوری تک انتخابی ریالیوں پر پابندی لگا دی گئی ہے-
اتر پردیش قانون ساز اسمبلی کی مدت 14 مئی کو ختم ہو رہی ہے، جب کہ اتراکھنڈ اور پنجاب اسمبلی کی مدت 23 مارچ کو ختم ہو رہی ہے۔ گوا قانون ساز اسمبلی کی مدت 15 مارچ اور منی پور قانون ساز اسمبلی کی مدت 19 مارچ کو ختم ہو رہی ہے۔

انتخابات کے اعلان کے ساتھ ہی پانچوں ریاستوں میں انتخابی ضابطہ اخلاق نافذ ہو گیا۔

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *