Type to search

تلنگانہ

اسدالدین اویسی نے کہا – این پی آر اور این آر سی میں کوئی فرق نہیں، گمراہ کررہے ہیں امت شاہ

حیدرآباد،26ڈسمبر(اردو پوسٹ انڈیا ڈاٹ کام) اے آئی ایم آئی ایم کے سربراہ اسدالدین اویسی نے مسلم تنظمیموں کے نمائندوں کے ساتھ چیف منسٹر کے چندرشیکھر راؤ سے چہارشنبہ کو ملاقات کی۔ اس دوران انہوں نے این پی آر کے اپ ڈایٹ پر بھی کیرل کی طرح ہی روک لگانے کی اپیل کی۔ میٹنگ ختم ہونے کے بعد باہر اویسی نے اسے مثبت بتاتے ہوئے کہا کہ انہوں نے راؤ کو بتایا کہ این پی آر دراصل این سی آر کی طرف بڑھنے کی پہلا قدم ہے۔ انہوں نے بتایا کہ وزیراعلی انکے مسئلہ پر اظہار ہمدردی ظاہر کی اور اس پر جواب دینے کے لیے دو دن کا وقت مانگا۔ حیدرآباد کے ایم پی اسدالدین اویسی یہاں شہر کے یوناٹیٹڈ مسلم ایکشن کمیٹی کے نمائندوں کے ساتھ تھے۔

مرکزی حکومت کا واضح طور پر کہنا ہے کہ قومی آبادی رجسٹر (این پی آر) اور نینشل رجسٹر آف سیٹیزن (این آر سی) دونوں میں کوئی کنکشن نہیں ہے۔ حالانکہ، اے آئی ایم آئی ایم کے سربراہ اسدالدین اویسی نے حیدرآباد میں کہا کہ این پی آر اور این سی آر میں کچھ فرق نہیں ہے- مرکزی وزیر داخلہ ملک کو گمراہ کررہے ہیں- اسکے خلاف مظاہرہ کرنے کے لیے سبھی سیاسی پارٹیاں ایک ساتھ رہیں گے-

ایم پی اسد الدین اویسی نے کہا کہ میٹنگ کے دوران تلنگانہ کے وزیراعلی کے چندرشیکھر راؤ نے بھی مانا کہ شہریت قانون سی اے اے آئین کے خلاف تھا اور اسی وجہ سے تلنگانہ راشٹراسیمتی نے پارلیمنٹ میں اسکی مخالفت کی- اویسی نے کہا، وزیراعلی نے یقین دہانی کی کہ سی اے اے اور این پی آر کے خلاف جلد ہی کل جماعتی میٹنگ کی جائے گی- ہم نے بتایا کہ این پی آر اور این سی آر کے درمیان کوئی فرق نہیں ہے- ہم نے انہیں وزرات داخلہ کے کچھ دستاویز بھی دیکھائے جس میں اس بات کو بتایا گیا ہے کہ این پی آر، این سی آر سے پہلے کا قدم ہے-

‘این پی آر-این آر سی کے مابین کوئی رشتہ نہیں’

وزیر داخلہ امت شاہ نے نیوز ایجنسی کو دیئے انٹرویو میں واضح طور پر کہا کہ این پی آر اور این آر سی کے مابین  دور- دور تک کوئی تعلق نہیں ہے۔ انہوں نے کہا، ‘دونوں میں بنیادی فرق ہے- این پی آر آبادی کا رجسٹر ہے- اسکی بنیاد پر الگ الگ منصوبوں کو تیار کرتے ہیں- این سی آر میں ہرشخص سے ثبوت مانگا جاتا ہے کہ آپ کس بنیاد پر ہندوستان کے شہری ہے-

Tags:

You Might also Like