Type to search

ٹی وی اور فلم

انو ملک پھر ‘انڈین آئیڈل’ سے باہر ، سونا مہاپترا نے کہا ‘شکریہ

ٹی وی ڈسک،22نومبر(اردو پوسٹ انڈیا ڈاٹ کام) ریالٹی شو ‘انڈین آئیڈل 11’ میں بطور جج دکھائی دینے والے میوزک ہدایتکار انو ملک شو سے باہر ہوگئے ہیں۔ می ٹو کا الزام جھیل رہے انو ملک کے اس شو میں جج بننے پر سنگر سونا مہاپترا نے خوب مخالفت کی تھی۔ دراصل انو ملک پر سونا مہاپترا ، شیوتا پنڈت سمیت کچھ اور لڑکیوں نے جنسی ہراسانی کے الزام لگائے تھے۔ ایسے میں سونا مہاپترا نے انکے شو سے باہر ہونے کو ایک طرح کی جیت بتایا ہے۔

سونا مہاپترا نے ایک نیوز ایجنسی کو کہا، یہ بہت اچھی خبر ہے۔ سونی چینل کو کافی لمبا وقت لگ گیا یہ فیصلہ لینے میں پر خوش ہوں کہ آخر کار اسے شو سے باہر کیا گیا ہے۔ یہ پورے ملک کی لڑائی تھی۔ ایسے میں سارے لوگ تھے جو اس شخص (انو ملک) کو اس شو میں نہیں دیکھنا چاہتے تھے۔ جو خود کو نیشنل ٹی وی پر دیکھاتا تھا۔ کیونکہ یہ پیغام دیتا ہے کہ اس طرح کے لوگ کچھ بھی کرنے کے بعد آگے بڑھ سکتے ہیں۔

سونا نے آگے کہا ، میں صحیح اور انصاف کے لیے لڑ رہی تھی۔ یہ خبر پڑھنے کے بعد مجھے لگا کہ یہ ہر کسی کے لیے ایک جیت ہے۔ صرف میری نہیں ، ہر اس خاتون کی جو اس انسان کی طرف ہراساں کی گئی تھی۔ ہماری لڑائی پوری نہیں ہوئی ہے، یہ تو صرف شروعات ہے۔

بتادیں کہ انو ملک کے بیان کے مطابق انہوں نے اس شو سے خود کو اپنے آپ الگ کیا ہے۔ اس کام کے لیے انہیں چینل نے فورس نہیں کیا ہے، بلکہ اس پورے وقت میں چینل انکے لیے کافی ساتھ دیتا رہا ہے۔ غور طلب ہے کہ پچھلے سال سونا مہاپترا نے پہلی بار انو ملک کا نام لیکر جنسی ہراساں کے واقع کا ذکر کیا تھا۔ اسکے بعد اٹھے تنازعے کی وجہ سے انو ملک کو انڈین آئیڈل سیزن 10 کی جج کی کرسی چھوڑنی پڑی تھی۔

Tags:

You Might also Like