پی ایم مودی نے ملک کے نام کیا ریوا سولر پروجیکٹ

وزیر اعظم نریندر مودی

نئی دہلی،10جولائی (ذرائع) وزیر اعظم نریندر مودی نے جمعہ کو 750 میگاواٹ ریوا سولر پروجیکٹ لانچ کیا ہے۔ اس پروجیکٹ سے دہلی میٹرو کو بجلی ملے گی۔ مدھیہ پردیش کے ریوا میں قائم کیا گیا پروجیکٹ ریاست کا ایسا پہلا توانائی کا پروجیکٹ ہے جو ریاست باہر کسی ادارہ کو بجلی سپلائی کرئے گا۔

ریوا میگا سولر پروجیکٹ کو قوم کے نام وقف کیا اس منصوبے سے پیدا ہونے والی 24 فیصد بجلی دہلی میٹرو ریل پروجیکٹ کو دی جارہی ہے۔ باقی 76 فیصد بجلی مدھیہ پردیش میں استعمال ہوگی۔

مسٹر مودی نے ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے ساڑھے سات سو میگاواٹ کی صلاحیت والے اس پروجیکٹ کا افتتاح کیا۔ ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعہ مدھیہ پردیش کی گورنر محترمہ آنندیبن پٹیل لکھنؤ سے اور وزیر اعلی شیوراج سنگھ چوہان بھوپال سے شامل ہوئے

ریوا پروجیکٹ کاربن کا اخراج بھی کم ہوگا۔ ایک اندازے کے مطابق اس سے سال میں کاربن ڈائی آکسائیڈ میں 15 لاکھ ٹن کے برابر کا اخراج ہوگا۔ ہندوستان نے سال 2022 تک 175 گیگا واٹ تک قابل تجدید توانائی پیدا کرنے کے لئے منصوبے قائم کرنے کا ہف رکھا ہے، ریوا پروجیکٹ اسی سمت میں اٹھایا گیا ایک قدم ہے۔

پی ایم مودی نے اس پروجیکٹ کا آغاز ویڈیو کانفرنسنگ سے کی۔ انہوں نے کہا، آج ریوا نے تاریخ بنائی ہے۔ اب ایشیا کے سب سے بڑے سولر پروجیکٹ کا نام ریوا کے ساتھ جڑ گیا ہے۔ ہندوستان دنیا کے پانچ سب سے ذیادہ اور توانائی پیدا کرنے والے ملکوں میں پہنچ گیا ہے۔

 

پی ایم مودی نے اس دوران ایک بار پھر اپنی حکومت کے آتما نربھر بھارت مہم پر زور دیتے ہوئے کہا کہ آتما نربھر بھارت کے لیے بجلی سیکٹر میں خود انحصار بہت ضروری ہے۔ اس میں اور توانائی بہت بڑا رول نبھانے والی ہے۔ پی ایم مودی نے کہا، شمسی پینل اور دوسرے آلات کے درآمد کو لیکر ہمیں دوسرے ملکوں پر اپنے انحصار کو کم کرنا ہوگا۔ سولار ماڈیولس کے پیداوار کی صلاحیت کو بھی بڑھانا ہوگا۔