Type to search

تلنگانہ

حیدرآباد میں دوپہر سے پہلے ہی دکانات بند کروا دی گئی

hyderabad madina building x road lockdown

حیدرآباد21اپریل (اردو پوسٹ انڈیا ڈاٹ کام) شہر حیدرآباد میں لاک ڈاؤن کے دوران کئی افراد بنا وجہ گھروں سے نکل رہے ہیں۔ اس سلسلہ میں پولیس کی طرف سے کئی بار کہا گیا کہ وہ گھروں سے باہر نہ نکلیں ، مگر شہری لاک ڈاؤن کی خلاف ورزی کرتے نظر آئے۔ پولیس کمشنر گذشتہ روز بتایا کہ اگر عوام پولیس کا ساتھ نہیں دے گی تو پولیس کو سختی کرنا پڑے گا۔

حیدرآباد میں پولیس نے لاک ڈاون میں مزید سختی کے تلنگانہ کے ڈی جی پی مہیندر ریڈی کے گذشتہ روز کئے گئے اعلان کے مطابق آج دکانات کو دوپہر سے پہلے ہی بند کروادیا۔ پولیس نے سڑکوں پر پھل اورسبزی کی دکانات لگانے والوں کا تعاقب کئی مقامات پر کیا۔ پولیس نے بڑے پیمانہ پر گاڑیوں کو بھی ضبط کیا۔

ذرائع کے مطابق صبح دس بجے سے گیارہ بجے کے درمیان 400 گاڑیوں کے پاس کو رد کیا گیا ہے۔ جسے پولیس کی طرف جاری کیے گئے تھے اور لوگ اس کا غلط استعمال کرتے ہوئے پائے گئے۔ یہ لوگ غیر ضروری سڑکوں پر نظر آئے۔

کمشنر سٹی پولیس انجنی کمار نے بتایا تھا کہ آپ گھروں سے باہر نکل کر بیماری کو اپنے گھر لار ہے ہیں۔ اور اپنے ہی خاندان والوں کو بیماری پھیلا رہے ہیں۔ حکومت اور انتظامیہ سبھی اس وبا کے لیے لڑرہے ہیں اور ایسے عوام ان کا ساتھ دے تو اس وبا سے جلد نجات مل سکتی ہے۔